Book Name:Al Wazifa tul karima

{18}اَللّٰهُمَّ اِنِّي اَعُوْذُ بِكَ مِنَ الْهَمِّ وَالْحُزْنِ وَاَعُوْذُ بِكَ مِنَ الْعَجْزِ وَالْكَسَلِ وَاَعُوْذُ بِكَ مِنَ الْجُبْنِ وَالْبُخْلِ وَاَعُوْذُ بِكَ مِنْ غَلَبَةِ الدَّيْنِ وَقَهْرِ الرِّجَالِ([1]) ایک ایک بار، غم و اَلم سے بچے ، ادائے قرض کیلئے گیارہ گیارہ بار پڑھے ۔([2])

{19} يَا حَىُّ يَا قَيُّوْمُ بِرَحْمَتِكَ اَسْتَغِيْثُ فَلَا تَكِلْنِىْٓ اِلٰى نَفْسِىْ طَرْفَةَ عَيْنٍ وَّاَصْلِحْ لِىْ شَاْنِىْ كُلَّهٗ ([3])  ایک ایک بار، سب کام بنیں ۔

{20} اَللّٰهُمَّ خِرْلِیْ وَاخْتَرْلِیْ  اِلٰیٓ اِخْتِیَارِیْ ([4])سات سات بار، دن رات کے ہر کام کے لئے استخارہ ہے ۔

{21}سَيِّدُ الْاِسْتِغْفَارِایک ایک یاتین تین بار، گناہ معاف ہوں اور اس دن رات میں مرے تو شہید، وہ یہ ہے  :

            اَللّٰهُمَّ اَنْتَ رَبِّي لَا اِلٰهَ اِلَّآاَنْتَ خَلَقْتَنِيْ وَاَنَا عَبْدُكَ  وَاَنَا عَلٰی عَهْدِكَ وَوَعْدِكَ مَا اسْتَطَعْتُ اَعُوْذُ بِكَ مِنْ شَرِّ مَا صَنَعْتُ وَأَبُوْٓءُ لَكَ بِنِعْمَتِكَ عَلَيَّ، وَأَبُوْٓءُ  لَکَ بِذَنْبِۢیْ فَاغْفِرْ لِي فَاِنَّهُ لَا يَغْفِرُ الذُّنُوْبَ اِلَّا اَنْتَ۔ ([5])

فقیر اس کے بعد اتنا زائد کرتا ہے  :  وَاغْفِرْ لِكُلِّ مُؤْمِنٍ وَّ مُؤمِنَۃٍ ([6])اور اپنے جس فعل سے کسی ضرر کا اندیشہ ہو تا ہے مولیٰ تعالیٰ محفوظ رکھتا ہے ۔

{22} لَا اِلٰهَ اِلَّا اللهُ الْمَلِكُ الْحَقُّ الْمُبِيْنُ ([7])سو سو بار

            دنیا میں فاقہ نہ ہو، قبر میں وحشت نہ ہو، حشر میں گھبراہٹ نہ ہو۔([8])

صرف صبح

{1} بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیۡمِ وَلَا حَوْلَ وَلَا قُوَّةَ إِلَّا بِاللهِ الْعَلِيِّ الْعَظِيْمِ ([9])ہر کام بنے ، شیطان سے محفوظ رہے ۔([10])

{2} سورۂ اخلاص ([11])گیارہ بار ، ا گر شیطان مع اپنے لشکرکے کوشش کرے کہ اس سے گناہ کرائے نہ کرا سکے جب تک کہ یہ خود نہ کرے ۔([12])

{3} يَا حَيُّ يَا قَيُّوْمُ لَا اِلٰهَ اِلَّا اَنْتَ([13])  اکتالیس بار

            اس کا دل زندہ رہے گا اور خاتمہ ایمان پر ہو گا۔

{4} سُبْحَانَ اللهِ الْعَظِيْمِ وَبِحَمْدِهٖ([14])تین بار

            جنون ، جذام وبرص و نا بینائی سے بچے ۔([15])

{5}تلاوتِ قرآن عظیم کم از کم ایک پارہ، حتی الامکان طلوعِ شمس سے پہلے ہو اور اگر آفتاب نکل آئے تو ٹھہر جائے اور ذکر واذکار کرے یہاں تک کہ آفتاب بلند ہوجائے ۔ جن تین وقتوں میں نماز ناجائز ہے تلاوت بھی مکروہ ہے ۔   

{6}دلائل الخیرات ایک حزب

{7}شجرہ شریف۔                دلائل و شجرہ قبل ِطلوع ہوں یا بعد ِطلوع۔

 



[1]     ترجمہ  : اے اللہ! عَزَّ وَجَلَّ  میں غم واَلَم، عجزوسستی، بزدلی وبُخل ، قرضے کے غلبے اورلوگوں کے قہر سے تیری پناہ مانگتاہوں ۔

[2]     سنن ابی داود، کتاب الصلوۃ، کتاب الوتر، باب فی الاستعاذۃ، الحدیث : ۱۵۵۵، ج۲، ص۱۳۳

[3]    ترجمہ  : اے حی! اے قیوم! تیری رحمت کے ساتھ میں تجھ سے فریاد کرتا ہوں کہ ایک پل کیلئے بھی مجھے میرے نفس کے سپرد نہ کرنا

اور میرے تمام حال کو درست کردے ۔

[4]    ترجمہ  :  اے اللہ عَزَّ وَجَلَّ  میرے لیے بہترمعاملہ مقدر فرما اور اس میں بھلائی عطافرما اور مجھے میرے نفس کے سپرد نہ فرما۔(کشف الخفاء، حرف الخاء المعجمۃ، الحدیث : ۱۲۷۴، ج۱، ص۳۵۲)

[5]     ترجمہ  : الٰہی عَزَّ وَجَلَّ  تو میرا رب ہے تیرے سوا کوئی معبود نہیں تو نے مجھے پیدا کیا اورمیں تیرابندہ ہوں اور بقدر ِ طاقت تیرے عہد وپیمان پر قائم ہوں میں اپنے کئے کے شر سے تیری پناہ مانگتا ہوں اور تیری نعمت کا جو مجھ پر ہے اقرار کرتا ہوں اور اپنے گناہوں کا اعتراف کرتا ہوں مجھے بخش دے کہ تیرے سوا کوئی گناہ نہیں بخش سکتا۔(السنن الکبرٰی للنسائی، کتاب عمل الیوم واللیلۃ ، الحدیث :  ۱۰۴۱۷ ، ج۶ ، ص۱۵۰ وعمل الیوم واللیلۃ لابن السنی، باب مایقول اذا اصبح، الحدیث : ۴۳، ص۲۲)

[6]     ترجمہ  :  اور تمام مؤمن مَردوں اور عورتوں کی بخشش فرما۔

[7]     ترجمہ  : اللہ عَزَّ وَجَلَّ  کے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں جو صریح سچا بادشاہ ہے ۔

[8]     حلیۃ الاولیاء، ۴۱۰۔سالم الخواص، الحدیث : ۱۲۳۱۲، ج۸ ، ص۳۰۹بالتغیر۔

[9]     ترجمہ  : اللہ کے نام سے جو بہت مہربان رحمت والا، گناہوں سے بچنے کی طاقت اور نیکی کرنے کی توفیق

اللہ کی طرف سے ہے جو کبریائی اور بڑائی والا ہے ۔

[10]     بعض مطبوعوں میں اس دعا کی کوئی تعداد مذکور نہیں اور بعض میں گیارہ بار تحریر ہے ۔واللہ تعالٰی اعلم

[11]    قُلْ هُوَ اللّٰهُ اَحَدٌۚ(۱) اَللّٰهُ الصَّمَدُۚ(۲) لَمْ یَلِدْ ﳔ وَ لَمْ یُوْلَدْۙ(۳) وَ لَمْ یَكُنْ لَّهٗ كُفُوًا اَحَدٌ۠(