Book Name:Aarzoo e Deedar e Madina

کر لُطف وکرم از پئے سرکارِ مدینہ

 

یاربّ دلِ عطّارؔ پہ چھائی ہے اُداسی

کرشاد دِکھا کر اسے گلزارِ مدینہ

تِرے دَر سے ہے منگتوں کا گُزارا یاشہِ بغداد

تِرے در سے ہے منگتوں کا گزارا یاشہِ بغداد

یہ سُن کر میں نے بھی دامن پَسارا یاشہِ بغداد

 

مِری قسمت کا چمکا دو ستارہ یاشہِ بغداد

دکھا دو اپنا چہرہ پیارا پیارا یاشہِ بغداد

 

اجازت دو کہ میں بغداد حاضِر ہو کے پھر کر لوں

تمہارے نیلے گنبد کا نظّارہ یاشہِ بغداد

 

غمِ شاہِ مدینہ مجھ کو تم ایسا عطا کر دو

جگر ٹکڑے ہو دل بھی پارہ پارہ یاشہِ بغداد

 

مدینے کا بنا دو تم مجھے کچھ ایسا دیوانہ

پھروں دیوانگی میں ما را مارا یاشہِ بغداد

 

خدا کے خوف سے روئے نبی کے عشق میں روئے

عطا کر دو وہ چشمِ تر خدارا یاشہِ بغداد

 

گناہوں کے مَرَض نے کر دیا ہے نِیم جاں مجھ کو

تمہیں آ کے کرو اب کوئی چارہ یاشہِ بغداد

 

 

مجھے اچھا بنا دو میٹھے مُرشِد کہ یقیناً ہیں

مِرے حالات تم پر آشکارا یاشہِ بغداد

 

سُدھارو میرے مُرشِد مجھ گنہگار و کمینے کو

نہ جانے تم نے کتنوں کو سُدھارا یاشہِ بغداد

 



Total Pages: 10

Go To