Book Name:Ilm O Hikmat Kay 125 Madani Phool

حوالہ دیجئے۔

(31)فِقہی ’’جُزئِیّہ‘‘(جُز۔ئی۔یَہ)مکمَّل کرنے کے بعد مزید اپنی طرف سےکچھ لکھنا ہو تو پہلے حوالہ ڈالدیجئے تا کہ آپ کی عبارت اورفِقہی جُزئیے میں  امتیاز ہوجائے۔

(32)قراٰنی آیات لکھنے کے بعد ان کاحوالہ دینے میں مختصر انداز میں  پارہ نمبر ، سورت کا نام اور آیت نمبر ڈالئے، مَثَلاًاس طرح’’۱۲یوسف۲۵) ‘‘نیز حدیثِ پاک اور فِقہی جُزئیہ تحریر کرنے میں  کتاب کا نام، باب، جلدو صفحہ نمبراور مطبع کا نام وغیرہ مختصر انداز میں  لکھئے۔مَثَلاً یہ انداز : (بہارِشریعت، ج۱، ص ۲۵ مکتبۃ المدینہ)ضرورتاً شہر کا نام بھی لکھئے۔

(33)فتاوٰی رضویہمُخَرَّجہ کے مسئلے کوضَرورت کے وَقت فتاوٰی رضویہ غیرمُخَرَّجہ  سے ملا لیا کریں  ۔

(34)غیر تخریج شدہ فتاوٰی رضویہ کا حوالہ دیتے وقت لفظ ’’قدیم‘‘کے بجائے غیر مُخَرَّجہ اور تخریج شدہ کیلئے لفظ’’جدید‘‘ کی جگہ مُخَرَّجہ لکھئے کہ جدیدنسخے بھی آخِر قدیم ہوہی جائیں  گے مگر بعد میں  آنیوالوں  کوآپ کی تحریروں  میں  ’’جدید‘‘کا لفظ عجیب سا لگے گا۔اَلْحِکْمَۃُ ضالَّۃُ الْمُؤْمِنِ یعنی حکمت مُؤمن کا گمشدہ خزانہ ہے۔(مرقاۃ المفاتیح، کتاب الایمان، باب اثبات عذاب القبر، ج۱، ص۳۴۵)

(ابتِدائی 12جلدیں  ہی غیر مخرجہ تھیں  انہیں  کی تخریج کر کے 30جلدیں  [1]؎ بنائی گئی ہیں  لہٰذا 12ویں جلد کے بعد والی جلدوں  کا حوالہ دینے پر’’ مخرجہ‘‘ لکھنے کی بھی حاجت نہیں )

( 35) حوالہ دیتے وَقت کبھی ضَرورتاً یوں  بھی لکھا جا سکتا ہے : مَثَلاً صدر الشریعہ بدر الطریقہ حضرت علامہ مولیٰنا امجد علی اعظمی علیہ رحمۃ اللہ القوی بہارِشریعت حصّہ12 میں  دُرِّمختار، ہدایہ اور عالمگیری وغیرہ کے حوالے سے نقل فرماتے ہیں  :   

(36)اگر کتاب یا رسالہ مکتبۃ المدینہ کا مطبوعہ ہو تو ذیل میں  دئیے ہوئے اندازسے حوالہ دیجئے :

          (الف)دعوتِ اسلامی کے اشاعتی ادارے مکتبۃ المدینہ کی مطبوعہ 1250 صَفحات پر مشتمل کتاب ، ’’بہارِ شریعت‘‘جلد اوّل صَفْحَہ 253پر صدرُ الشَّریعہ، بدرُ الطَّریقہ حضرتِ  علّامہ مولیٰنامفتی محمد امجد علی اعظمیعلیہ رحمۃ اللہ القوی فرماتے ہیں :

          (ب)دعوتِ اسلامی کے اشاعتی ادارے مکتبۃ المدینہ کی مطبوعہ 1250 صَفحات پر مشتمل کتاب ، ’’بہارِ شریعت‘‘جلد اوّل صَفْحَہ 253پر ہے :

          (ج)دعوتِ اسلامی کے اشاعتی ادارے مکتبۃ المدینہ کی مطبوعہ649 صَفحات پر مشتمل کتاب ، ’’ حکایتیں  اور نصیحتیں ‘‘ صَفْحَہ137پر ہے :

(37)ترجَمہ شدہ کتاب سے مَواد لیں  توحوالہ دیتے وقت کتاب کے نام کے ساتھ لفظ’’ مُتَرجَم‘‘ بھی لکھئے۔

(38)دورانِ تحریر کتاب و رسالے کا حوالہ آئے توجَلی حُرُوف میں  لکھئے یااس طرح نُمایاں  کردیجئے مَثَلاً : ’’فتاوٰی رضویہ‘‘’’بہارِ شریعت ‘‘ ’’ فیضانِ سنّت‘‘  وغیرہ۔

(39)عبارت کے دَوران اعداد لکھنے کی ضَرورت ہو تو انگریزی ہندسوں  میں لکھئے تاکہ عوام کیلئے سمجھنا آسان ہو۔

آیات کا ترجَمہ کنزالایمان سے لیجئے

 



[1]       اَلْحَمْدُلِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ! مکتبۃ المدینہ نے فتاوٰی رضویہ کی 30جلدوں  پر مشتمل سافٹ وئیرCdبھی جاری کردی ہے ، مکتبۃ المدینہ کی کسی بھی شاخ سے ھدیۃً حاصل کیجئے ۔



Total Pages: 41

Go To