Book Name:Wasail e Bakhshish

وہاں   تو اندھیرے میں   بھی روشنی ہے              یہاں   پر اُجالے میں   بھی تِیرگی([1])ہے

وہاں   دن تھے روشن تو شب بھی مُنَوَّر              مدینے میں   کیسا سُرُور آ رہا تھا

خوشا! دھوپ تھی ٹھنڈی ٹھنڈی وہاں   پر         تھی کیا چھاؤں   بھی مہکی مہکی وہاں   پر

وہاں   ذَرّہ ذَرّہ ہے صد رشکِ گوہر                  یقینا مدینہ ہے صد رشکِ جنّت

مدینے میں   کیسا سُرُور آ رہا تھا                         مدینے میں   ہے میٹھے آقا کی تُربت

اے عطارؔ کیوں   چھوڑ کر آئے وہ در

مدینے میں   کیسا سُرُور آ رہا تھا

 

دل پہ غم چھا گیا یا رسولِ خدا

دل پہ غم چھا گیا، یارسولِ خدا                        کیا بنے گا مِرا، یارسولِ خدا

زورِ طوفان ہے، پھنس گئی جان ہے                 المدد ناخدا، یارسولِ خدا

آہ! ناکامیاں  ، ہائے بربادیاں                           ہوگا اب میرا کیا، یارسولِ خدا

چھائیں  تاریکیاں  ، اُف!یہ اندھیاریاں               کیجئے چاندنا([2])، یارسولِ خدا

ناؤ منجدھار([3])میں  ، ڈوبا سرکار میں                     آہ! اے ناخدا، یارسولِ خدا

دھنس گیا دھنس گیا، پھنس گیا پھنس گیا          تم نکالو شہا، یارسولِ خدا

قَلب غِربال([4])ہے، حال بے حال ہے             تیرے بیمار کا، یارسول خدا

قلب ناشاد([5])ہے، چَین برباد ہے                   ہو کرم سیِّدا، یارسولِ خدا

دیدو دل کو قرار، اے شہِ ذی وقار                 صدقہ صِدِّیق کا، یارسولِ خدا

بگڑی قسمت سَنوار، اے مرے تاجدار          صدقہ فاروق کا، یارسولِ خدا

دُور آفات ہوں  ، ٹھیک حالات ہوں           صدقہ عثمان کا، یارسولِ خدا

ہم سبھی ایک ہوں  ، ایک ہوں   نیک ہوں       ازپئے مُرتَضٰی، یارسولِ خدا

 



[1]     اندھیرا ۔

[2]     روشنی ۔

[3]     دریا کے بیچ کی دھار ۔

[4]     زخموں   سے چھلنی ۔

[5]     رنجیدہ ۔



Total Pages: 406

Go To