Book Name:Wasail e Bakhshish

یاشہِ عالی وقار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

بادشاہِ نامدار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

غمزدوں   کے غمگسار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

بے قراروں   کے قَرار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

دو جہاں   کے تاجدار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

سرورِ بااختیار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

 

مرہمِ قلبِ فِگار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

میرا بگڑا دل سَنوار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

عزّتِ رُسوا و زار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

قوّتِ زار و نَزار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

نور کی برسی پُھوار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

آیا ہر شے پر نِکھار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

کر منوَّر قلبِ تار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

دُور ہو دل کا غُبار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

سب سے بڑھ کر کامگار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

باعثِ باغ و بہار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

جلوہ کر دے آشکار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

ہو فِدا عطارِ  ؔ زار، اہلاًوَّسَہلاًمرحبا

سب پکارو جھوم کر میٹھا مدینہ مرحبا

(الحمدُ للّٰہ ۱۴۱۴ھ کی حا ضری میں   بتا ریخ۲۷ذوالحجہ مسجدِ نبوی شریفعلٰی صاحِبِہا الصَّلٰوۃ وَالسَّلام میں   بیٹھ کر یہ کلام قلمبند کیا )

سب پکارو جھوم کر میٹھا مدینہ مرحبا

کر کے خم سب اپنا سر میٹھا مدینہ مرحبا

 

 



Total Pages: 406

Go To