Book Name:Wasail e Bakhshish

اُستانی کی کرتی رہوں   ہر دم میں   اِطاعت

ماں   باپ کی عزّت کی بھی توفیق خدا دے

کپڑے میں   رکھوں   صاف تُو دل کو مرے کر صاف

اللّٰہ ! مدینہ مِرے سینے کو بنادے

فِلموں  سے ڈِراموں   سے عطاکردے تُو نفرت 

بس شوق مجھے نعت و تلاوت کا خدا دے

اَوقات کے اندر ہی پڑھوں   ساری نَمازیں 

اللّٰہ ! عبادت میں   مِرے دل کو لگادے

 

پڑھتی رہوں   کثرت سے دُرود اُن پہ سدا میں 

اور ذکر کا بھی شوق پئے غوث و رضا دے

سنّت کے مطابِق میں   ہر اک کام کروں   کاش

تُو پیکرِ سنّت مجھے اللّٰہ ! بنادے

میں   جھوٹ نہ بولوں   کبھی گالی نہ نکالوں  !

اللّٰہ  مَرض سے تُو گناہوں   کے شِفادے

میں   فالتو باتوں   سے رہوں   دُور ہمیشہ

چُپ رہنے کااللّٰہ ! سلیقہ تُو سکھادے

اَخلاق ہوں   اچھّے مرا کِردار ہو ستھرا

محبوب کا صدقہ تُو مجھے نیک بنادے

اُستانی ہوں   ماں   باپ ہوں   عطارؔ بھی ہو ساتھ

یوں   حج کو چلیں   اور مدینہ بھی دِکھادے

اللّٰہ! کو ئی حج کا سبب اب توبنا دے

اللّٰہ! کوئی  حج  کا  سبب  اب  تو  بنا  دے

 



Total Pages: 406

Go To