Book Name:Wasail e Bakhshish

اَوقات کا بھی مجھ کو تُو پابند بنا دے

اُستاد ہوں   موجود یا باہَر کہیں   مصروف

عادت تُو مِری شورمچانے کی مِٹا دے

 

خَصلَت ہو مری دُور شرارت کی الٰہی!

سنجیدہ بنادے مجھے سنجیدہ بنا دے

اُستاد کی کرتا رہوں   ہر دم میں   اِطاعت

ماں   باپ کی عزّت کی بھی توفیق خُدا دے

کپڑے میں   رکھوں   صاف تُو دِل کو مِرے کر صا ف

مولیٰ تُو مدینہ مِرے سینے کو بنا دے

فِلموں   سے ڈِراموں   سے دے نفرت تُو الٰہی

بس شوق مجھے نعت وتِلاوت کا خُدا دے

میں   ساتھ جماعت کے پڑھوں   ساری نَمازیں 

اللّٰہ! عبادت میں   مِرے دل کو لگا دے

پڑھتا رہوں   کثرت سے دُرُود اُن پہ سَدا مَیں 

اور ذِکْر کا بھی شوق پئے غوث ورضا دے

 

ہر کام شریعت کے مطابِق میں  کروں   کاش!

یارب تو مُبلِّغ مجھے سُنّت کا بنا دے

میں   جھوٹ نہ بُولوں   کبھی گالی نہ نِکالوں 

اللّٰہ  مَرض سے تُو گناہوں   کے شِفا دے

میں   فالتو باتوں   سے رہوں   دُور ہمیشہ

چُپ رہنے کا اللّٰہ ! سلیقہ تُو سِکھا دے

اَخلاق ہوں   اچّھے مِرا کردار ہو سُتھرا

 



Total Pages: 406

Go To