Book Name:Wasail e Bakhshish

سدا پیرومرشِد رہیں   مجھ سے راضی      کبھی بھی نہ ہوں   یہ خفا یاالٰہی

بنادے مجھے ایک در کا بنادے          میں   ہردم رہوں   باوفا یاالٰہی

تجھے واسِطہ سیِّدہ آمِنہ کا بنا                عاشقِ مصطَفٰے یاالٰہی

مجھے مال و دولت کی آفت نے گھیرا       بچا یاالٰہی بچا یاالٰہی

نہ دے جاہ وحَشمت نہ دولت کی کثرت گدائے مدینہ بنا یاالٰہی

مجھے غیبت و چغلی و بدگمانی کی           آفات سے تُو بچا یاالٰہی

یہ دل گورِ تِیرہ سے گھبرا رہا ہے        پئے مصطَفٰے جگمگا یاالٰہی

بقیعِ مبارک میں   تدفین میری ہو،      حسنین کا واسطہ یاالٰہی

تُو عطارؔ کو چشمِ نَم دے کے ہر دم

مدینے کے غم میں   رُلا یاالٰہی

 

عمل کا ہو جذبہ عطا یا الٰہی

عمل کا ہو جذبہ عطا  یاالٰہی

گُناہوں   سے مجھ کو بچا یاالٰہی

میں   پانچوں   نَمازیں   پڑھوں   باجماعت

                                                ہو     توفیق      ایسی عطا       یاالٰہی

میں   پڑھتا رہوں   سنتیں  ، وقْت ہی پر

ہوں    سارے  نوافِل ادا   یاالٰہی

دے شوقِ تلاوت دے ذَوقِ عبادت

                                              رہوں      بَاوُضو     میں   سدا      یاالٰہی

ہمیشہ نگاہوں   کو اپنی جھکا کر

کروں    خاشِعانہ دُعا  یاالٰہی

 

نہ ’’نیکی کی دعوت‘‘ میں   سستی ہو مُجھ سے

    بنا     شائقِ     قافِلہ     یا    الٰہی

 



Total Pages: 406

Go To