Book Name:Wasail e Bakhshish

گفتگو صادِر نہ کچھ بے کار ہو اِحرام میں 

لب پہ بس لبّیک کی تکرار ہو اِحرام میں 

جب کرے تُو خانۂ کعبہ کا رو رو کر طواف

یہ دُعا کرنا خُدا میرے گُنہ کردے معاف

تیرا حجّن! جس گھڑی ہو داخِلہ عَرفات میں 

کرنا نادِم ہوکے تُو آہ و([1])بُکا عَرفات میں 

حالتِ اِحرام میں   یادِ کَفَن ہو قَبْر ہو

یاد کر عَرفات میں   تُو حشر کے میدان کو

نو کو جب عَرفات میں   حاجی اِکٹھّے ہوں   سبھی

بھول مت جانا دعاؤں   میں   مجھے تُو اُس گھڑی

 

جس گھڑی کرنے لگے قُرباں   مِنٰی میں   جانور

تُو تَصوُّر ہی میں   اپنے نَفْس کو بھی ذَبْح کر

حاضِری ہو جب مدینے میں   تمہاری حَجَّنو!

عشقِ شہ  میں   خوب کرنا آہ و زاری حَجَّنو!

لے کے حجّن! بارگاہِ مصطفٰے میں   میرا نام

دَست بَستہ عرض کرنا ان سے رو رو کر سلام

رو کے کرنا میرے ایماں   کی حفاظت کی دُعا

دے شہادت کاشَرَف مجھ کو مدینے میں   خدا

اِس کا حج یارب! نبی کا واسِطہ کر لے قَبول

دوجہاں   میں   اِس پہ برسا یاخُدا رَحمت کے پھول

اپنے مُنہ سے خود کو حجّن تُو کبھی کہنا نہیں 

بے ضرورت اپنی نیکی کا بیاں   اچّھا نہیں 

ہر برس حج کا شَرَف پاؤ مدینے جاؤ تم

اور بقیعِ پاک میں   آخِر میں   مَدْفَن پاؤ تم

کرنا تم عطارؔ کے حق میں   دعائے مغفِرت

اِس جہاں   میں   عافِیت ہو اُس جہاں   میں   عافِیت

 

 



[1]     رونا ۔



Total Pages: 406

Go To