Book Name:Wasail e Bakhshish

خدا کے نیک بندے نیکیوں   میں   لگ گئے لیکن

گنہ کرتا  رہا  عطارؔ  ناداں    یارسولَ اللّٰہ

 

رُخصتی نامہ

دعاؤں   اور نصیحتوں   بھرارُخصتی نامہ ا اپنی مدنی بیٹی بنتِ ……… کے نام

فضلِ رب سے بنتِ …… دُلہن بنی

پھول خوشیوں  کے کِھلے چادر حیا کی ہے تنی

تجھ کو ہو شادی مبارک ہورہی ہے رُخصتی

رخصتی میں   تیری پنہاں  ([1])قبر کی ہے رخصتی

گھر ترا ہو مُشکبار اور زندگی بھی پُر بہار

رب ہوراضی خوش ہوں  تجھ سے دوجہاں  کے تاجدار

مَدنی بیٹی کا خدایا گھر سدا آباد رکھ

فاطِمہ زَہرا کا صدقہ دوجہاں   میں   شاد([2])رکھ

یہ مِیاں   بیوی الٰہی مَکرِ شیطاں   سے بچیں 

یہ نمازیں   بھی پڑھیں   اور سنتوں   پر بھی چلیں 

یہ میاں   بیوی چلیں   حج کو الٰہی! باربار

بار بار ان کو مدینہ بھی دکھا پروردگار

 

تیرا سُسرال اپنے رب کے فضل سے خوش حال ہو

تیرا میکا بھی کرم سے رب کے مالا مال ہو

تُو نہ غفلت کرنا  شوہر کی اطاعت سے کبھی

 ورنہ تُو اے پیاری بیٹی حشر میں   پچھتائے گی

مَدنی بیٹی یاخدا غُصّے کی ہو ہرگز نہ تیز

یہ کرے سُسرال میں   ہر دم لڑائی سے گُریز

یاد رکھ ! تُو آج سے بس تیرا گھر سُسرال ہے

 



[1]     پوشیدہ ۔

[2]     خوش ۔



Total Pages: 406

Go To