Book Name:Wasail e Bakhshish

الصَّلٰوۃُ وَالسَّلامُ علیکَ یانبیَّ اللّٰہ                                         وَعلٰی الِکَ وَاَصحٰبِک یانورَ اللّٰہ

          میٹھے میٹھے اسلامی بھا ئیو اور اسلامی بہنو! فجر کی نَماز کا وَقت ہو گیا ہے، سونے سے نَماز بہتر ہے، جلدی جلدی اٹھئے اورنَماز کی تیاری کیجئے ۔ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ  آپ کو بار بار حج نصیب کرے اور بار بار

 

  میٹھا مدینہ دکھا ئے، ( موقعے کی مُناسَبَت سے نیچے دی ہو ئی نظم میں   سے منتخب اشعار  بھی پڑھئے )

( رَمَضانُ المبارَک میں   سَحَری کے لئے اٹھا ئیں   توتہجُّد کی بھی تر غیب دلا ئیں   )

فَجر کا وَقت ہوگیا اُٹھو!

فجَر کا وقت ہوگیا اٹّھو!                              اے غُلامانِ مصطَفٰے اٹّھو!

جاگو جاگو اے بھائیو، بہنو!                      چھوڑدو اب تو بِسترا  اٹّھو!

تم کو حج کی خدا سعادت دے                    جلوہ دیکھو مدینے کا  اٹّھو!

اٹّھو ذکرِ خدا کرو اُٹھ کر!                         دل سے لو نامِ مصطَفٰے اٹّھو!

فجر کی ہو چُکیں   اَذانیں   وقت                    ہو گیا ہے نماز کا  اٹّھو!

بھائیو! اُٹھ کر اب وُضو کرلو!                    اور چلو خانۂ خدا  اٹّھو!

نیند سے تو نَماز بہتر ہے                            اب نہ مُطلَق بھی لیٹنا  اٹّھو!

اُٹھ چکو اب کھڑے بھی ہو جاؤ!                  آنکھ شیطاں   نہ دے لگا  اٹّھو!

جاگو جاگو نَماز غفلت سے                       کر نہ بیٹھو کہیں   قَضا  اٹّھو!

اب ’’جو سوئے نماز کھوئے‘‘وقت                    سونے کا اب نہیں   رہا  اٹّھو!

 

یاد رکّھو! نماز گر چھوڑی                    قبر میں   پاؤگے سزا  اٹّھو!

بے نَمازی پھنسے گا محشر میں                 ہو گا ناراض کِبریا  اٹّھو!

میں   ’’صدائے مدینہ‘‘دیتا ہوں              تم کو طیبہ کا واسِطہ  اٹّھو!

میں   بِھکاری نہیں   ہوں   دَر دَر کا             میں   ہوں   سرکار کا گدا  اٹّھو!

مجھ کو دینا نہ پائی پیسہ تم!                   میں   ہوں   طالب ثواب کا اٹّھو!

تم کو دیتا ہے یہ دعا عطارؔ

 



Total Pages: 406

Go To