Book Name:Wasail e Bakhshish

قلب میں   جس کے راسِخ ہے خوفِ خدا    جو مقدّر سے ہے عاشقِ مصطَفٰے

اُس کو نارِ جہنَّم سے کیا واسِطہ               مرتے ہی بالیقیں   سُوئے جنّت گیا

ہے عمل جس کا ہر ’’ مَدنی اِنعام([1]) ‘‘پر        ’’قافِلوں  ([2])   ‘‘ میں   مُیَسَّر ہے جس کو سفر

جو بھی ’’ نیکی کی دعوت ‘‘ پہ باندھے کمر     اُس پہ چشمِ کرم یاشہِ بحروبر!

تو بڑا بامقدَّر اے عطارؔ ہے                   تو غلامِ شَہَنْشاہِ اَبرار ہے

ہر قدم پر محمد مددگار ہے                     اِنْ شَاءَ اللّٰہ  بیڑا   تِرا   پار   ہے

’’قافِلے‘‘ کو جو ہر وقت تیّار ہے

مرحبا اُس سے عطارؔ کو پیار ہے

اُس کے حق میں   دعا کرتا عطّارؔ ہے

اِس کو جنّت میں   ساتھ اُس کا درکار ہے

 

تین روزہ اجتِماعِ پاک کے ملتان میں 

تین روزہ اجتماعِ پاک کے مُلتان میں 

ہر طرف سے آرہے ہیں  قافلے ملتان میں 

آج’’ صحرائے مدینہ‘‘ میں   ہے کیاآئی بہار

چار سُو ہیں   رحمتوں   کے گُل کِھلے ملتان میں 

بینَ الاقوامی ہمارا اجتماعِ پاک ہے

ہیں   کئی ملکوں   سے آئے قافلے ملتان میں 

اجتِماعِ پاک یارب! ابتِدا تا انتہا

خیرسے ہو خیرسے ہو خیرسے ملتان میں 

 



[1]     دعوت اسلامی کے مدنی ماحول میں   اپنی اصلاح حال کے لئے دینی طلبہ کو (92)دینی طالبات کو(82)اسلامی بھائیوں   کو(72)اور اسلامی بہنوں   کو (63)خصوصی(گونگے بہرے )اسلامی بھائیوں   کو(27)’’مدنی انعامات‘‘ سُوالات کی صورت میں   پیش کئے جاتے ہیں   اورترغیب دی جاتی ہے کہ’’ فکر مدینہ ‘‘ (یعنی  اپنا محاسبہ کرنے )کے ذریعے روزانہ ان سوالات کا رسالہ پُر کریں   اور ہر مدنی ماہ کی ۱۰ تاریخ تک جمع کروادیں  ۔ ۔

[2]     ہر اسلامی بھائی کو ہر ماہ کم از کم تین دن کے لئے مدنی قافلے میں   سفر کرنے کی رغبت دلائی جاتی ہے اور کئی خوش نصیب ایسے بھی ہوتے ہیں   جو اپنے گھر بار کے حُقوق نبھاتے ہوئے دعوت اسلامی کے لئے وقف ہوجاتے اور ہر وقت مدنی قافِلوں   میں   سفر کرتے رہتے ہیں  ۔    ۔



Total Pages: 406

Go To