Book Name:Wasail e Bakhshish

از طفیلِ مصطفٰے فرما الٰہی درگزر

آہ! شیطاں   ہر گھڑی ہر وقت غالب ہی رہا

عادتِ عصیاں   نے رکھ دی توڑ کر ہائے! کمر

 

خوب خدمت سنّتوں   کی ہم سدا کرتے رہیں   

مَدنی ماحول اے خدا ہم سے نہ چھو ٹے عمر بھر

اِس عَلاقے والے سارے بھائیوں   کا شکریہ

ساتھ جو دیتے رہے ہیں   قافلے کا سر بسر

سنّتوں   کی تربیت کے واسطے نکلا تھا میں   

ہا ئے پر سوتا رہا غفلت کی چادر تان کر

یارسولَ اللّٰہ اپنے در پہ اب بلوایئے

ہو نصیب آقاہمیں   میٹھے مدینے کا سفر

ہے دعا عطّارؔ کی: ’’اس کی ہو حتمی مغفرت‘‘

قافلوں   میں   عمر بھر کرتا رہے جو بھی سفر

لعنت کی تعریف

’’اللّٰہ تعالی  کی رحمت سے دُوری  اور محرومی۔‘‘خیال رہے کہ  اللہ عزوجل کی لعنت کے معنی ہیں:’’ رحمت سے دُورکرنا‘‘بندوں کی لعنت کے معنی ہیں: اس دوری کی بد دُعا کرنا۔(مراۃج۶ص۴۵۰)

 

             آئیں   گی سنّتیں   جائیں   گی شامَتیں  ،  مَد نی ماحول میں  کر لو تم اعتکاف

(یہ باقاعدہ نظم نہیں   ، فیضانِ سنّت جلد اول کے باب’’فیضانِ رمضان ‘‘ کے جُزفیضانِ اعتکاف کی مختلف ’’ مدنی بہاروں   ‘‘ وغیرہ کے آخر میں   لکھے ہوئے اشعارکہیں   کہیں  ترمیم کے ساتھ یکجا کئے گئے ہیں  )

آئیں   گی سنّتیں   جائیں   گی شامَتیں  ،            مَدنی ماحول میں   کر لو تم اعتِکاف

تم سدھر جاؤ گے، پاؤ گے برکتیں  ،            مَدنی ماحول میں   کر لو تم اعتِکاف

جلوۂ یار کی آرزو ہے اگر،                      مَدنی ماحول میں   کر لو تم اعتِکاف

میٹھے آقا کریں   گے کرم کی نظر،              مَدنی ماحول میں   کر لو تُم اعتِکاف

مرضِ عصیاں   سے چھٹکارا چاہو اگر،          مَدنی ماحول میں   کر لو تم اعتِکاف

آؤ آؤ اِدھر آبھی جاؤ اِدھر                   مَدنی ماحول میں   کر لو تم اعتِکاف

 



Total Pages: 406

Go To