Book Name:Wasail e Bakhshish

اِنْ شَآءَ اللہ آپ کو باغِ جِناں   دلوائے گا

مَدنی چَینل مدنی مُنّوں   کو بھی ہاں   دکھلائیے

دین کی باتیں   ابھی سے ان کو بھی سکھلائیے

کفر کے ایواں  میں   مولیٰ ڈالدے یہ زلزلہ

یاالٰہی! تا اَبَد جاری رہے یہ سلسلہ

مَدنی چَینل کے سبب نیکی کی دعوت عام ہو

عام دنیا بھر میں   یارب دین کا پیغام ہو

مَدنی چَینل کے مبلغ، نعت خواں   ، خدمت گزار

جس قدر بھی ہیں   سبھی کی مغفرت ہو کِردگار

مَدنی چَینل کیلئے جو ساتھ دے عطّاؔر کا

اِس پہ ہو رحمت خدا کی اور کرم سرکار کا

 

آؤ مدنی قافِلے میں   ہم کریں   مل کر سفر

آؤ مدنی قافِلے میں   ہم کریں   مل کر سفر

سنّتیں   سیکھیں   گے اس میں   ان شائَ اللّٰہسر بَسَر

تیس تیس اور بارہ بارہ دن کے مدنی قافِلے

میں   سفر کرتے رہو جب بھی تمہیں   موقع ملے

مجھ کو جذبہ دے سفر کرتا رہوں   پروَردگار

سنّتوں   کی تربیت کے قافِلے میں   بار بار

جھوٹ غیبت اور چغلی سے جو بچنا چاہے وہ

خوب مدنی قافِلوں   میں   دل لگا کر جائے وہ

جو بھی شیدائی ہے مدنی قافِلوں   کا یاخدا

دوجہاں   میں   اُس کا بیڑا پار فرما یاخدا

تین دن ہر ماہ جو اپنائے مدنی قافِلہ

بے حساب اس کا خدایا! خُلْد میں   ہو دَاخِلہ

تو ولی اپنا بنالے اُس کو ربِّ لَم یَزَل

’’مَدنی اِنعامات‘‘ پرکرتا ہے جو کوئی عمل

 



Total Pages: 406

Go To