Book Name:Wasail e Bakhshish

مرشدواستاد کا یارب بنا اِس کو مُطیع([1])

اور اسے ماں   باپ کا بھی تابعِ فرماں   بنا

 

اِس کو روزانہ تلاوت کی بھی تُو توفیق دے

قاریِ قرآں   بنا اور خادمِ قرآں   بنا

اس کو مولیٰ تُو گناہوں   سے بچانا ہر گھڑی

اس کو بااخلاق باکردار نیک انساں   بنا

باجماعت یہ ادا کرتا رہے ہر اک نماز

سنّتوں   کا ہو مبلِّغ قَہر برشیطاں   بنا

یاالٰہی! سنّتوں   کی خوب یہ خدمت کرے

واسطے نیکی کی دعوت اس کے تُو آساں   بنا

دے شَرَف اس کو خدائے پاک حج کا بار بار

بار بار اس کو مدینے کا بھی تُو مہماں   بنا

یاالٰہی! اس کو فیشن کی نحوست سے بچا

اس کو پیکر سنّتوں   کا ازپئے حَسّاں   بنا

تجھ سے ہے عطارؔ کی اے مَدنی مُنّے! التِجا

کرکے قرآں   پر عمل جنّت کا تُو ساماں   بنا

 

مَدنی چینل سنّتوں   کی لائیگا گھر گھر بہار

مَدنی چَینل سنّتوں   کی لائے گا گھر گھر بہار

مَدنی چَینل سے ہمیں   کیوں   والہانہ ہونہ پیار

مَدنی چَینل سے جسے بھی والہانہ پیار ہے

اِنْ شَآءَ اللہ دوجہاں   میں   اُس کا بیڑا پار ہے

ناچ گانوں   اورفِلموں   سے یہ چینل پاک ہے

مَدنی چَینل حق بیاں   کرنے میں   بھی بے باک ہے

 



[1]     فرماں  بردار ۔



Total Pages: 406

Go To