Book Name:Wasail e Bakhshish

ہرسُو دیں   کا بجا دے ڈنکا

یاخواجہ مِری جھولی بھردو

 

یاغوث! بلاؤ مجھے بغداد بلاؤ

یاغوث! بلاؤ مجھے بغداد بلاؤ

بغداد بلا کر مجھے جلوہ بھی دکھاؤ

دنیا  کی مَحَبَّتسے  مِری   جان  چھڑاؤ

دیوانہ مجھے شاہِ مدینہ کا بناؤ

چمکا دو سِتارہ مری تقدیر کا مرشِد!

مدفن کو مدینے میں   جگہ مجھ کو دلاؤ

نَیّا مِری منجدھار([1])میں   سرکار! پھنسی ہے

امداد کو آؤ! مری امداد کو آؤ

حَسنین کے صدقے ہوں   مری مشکلیں   آساں 

آفات  و  بَلِیّات([2]) سے  یاغوث!  بچاؤ

 

 

یاپیر!میں   عِصیاں   کے تلاطُم ([3]) میں   پھنسا ہوں   

لِلّٰہ گناہوں    کی  تباہی  سے  بچاؤ

اچّھوں   کے خریدار تو ہر جا پہ ہیں   مرشِد!

بدکار کہاں   جائیں   جو تم بھی نہ نبھاؤ

اَحکامِ شریعت رہیں   مَلحُوظ([4]) ہمیشہ

 



[1]     سمندر کے بیچ کی دھار   ۔

[2]     بَلِیَّہ کی جمع۔بلائیں   ۔

[3]     موجوں   کے تھپیڑے  ۔

[4]     لحاظ کیا گیا۔خیال رکھا گیا ۔



Total Pages: 406

Go To