Book Name:Wasail e Bakhshish

گرجتے بادلوں   کا شور چلتی آندھیوں   کا زور

لرزتا ہے کلیجا دو سہارا یاشہِ بغداد

بچالو دشمنوں   کے وار سے یا غوث جیلانی

بڑی امّید سے تم کو پکارا یاشہِ بغداد

وسیلہ چار یاروں   کا خدا سے بخشوا دیجے

کرم فرمایئے مجھ پر خدارا یا شہِ بغداد

اگرچِہ لاکھ پاپی ہے مگر عطارؔ کس کا ہے

تمہارا ہے تمہارا ہے تمہارا یاشہِ بغداد

نفاق  اعتقادی کی تعریف

زبان سے مسلمان ہونے کا دعویٰ کرنا اور دل میں اسلام سے انکار کرنا نفاقِ اعتقادی اور زبان و دل کا یکساں نہ ہونا نفاقِ عملی کہلاتاہے۔ (بہار شریعت، ج۱، ص۱۸۲)

 

در پر جو تیرے آ گیا بغداد والے مُرشِد

(یہ کلام یکم ربیع الآخر۱۴۳۲ھ کو موزوں   کیا)

در پر جو تیرے آ گیا بغداد والے مرشد

مَن کی مُرادیں   پا گیا بغداد والے مرشد

لینے شفائے کامِلہ دربار میں   اے کامل

بیمارِ عِصیاں   آگیا بغداد والے مرشد

جو کوئی تِیرہ بخت([1]) یہاں   ہوگیا ہے حاضِر

روشن نصیبہ پا گیا بغداد والے مرشد

 قدموں   میں   تیرے دنیا کے جھنجھٹ سے بس نکل کر

جو  آگیا سو پا گیا بغداد والے مرشد

جب بھی تڑپ کے کہہ دیا ’’یا غوث المدد‘‘ تب

اِمداد کو تُو آ گیا بغداد والے مرشد

 

 



[1]       بدنصیب ۔



Total Pages: 406

Go To