Book Name:Wasail e Bakhshish

غم مجھے میٹھے مدینے کا عطا کر دو شہا

میرا سینہ بھی مدینہ دو بنا داتا پیا

 

میٹھے میٹھے مصطَفٰے کی بارگاہِ پاک میں   

کیجئے میری سِفارش آپ یا داتا پیا

گو ذلیل وخوار ہوں   پاپی ہوں   میں    بدکار ہوں   

آپ کا ہوں   آپ کا ہوں   آپ کا داتا پیا

آرزو ہے موت آئے گنبدِ خَضرا تلے

ہاتھ اٹھا کر کیجئے حق سے دعا داتا پیا

میں   ہوں   عصیاں   کا مریض اور تم طبیبِ عاصِیاں 

ہو عطا مجھ کو گناہوں   کی دوا داتا پیا

آپ کی چشمِ کرم ہو جائے گر بدحال پر

دُور ہو غم کی ابھی کالی گھٹا داتا پیا

کیا غَرَض دردر پھروں   میں   بھیک لینے کیلئے

ہے سلامت آستانہ آپ کا داتا پیا

جھو لیاں   بھر بھر کے لے جا تے ہیں   منگتے رات دن

ہو مِری اُمّید کا گلشن ہرا داتا پیا

 

مجھ کو داتا تاجدارانِ جہاں   سے کیا غَرَض

میں   تو ہوں   منگتا ترے دربار کا داتا پیا

اُجڑے گھر آباد ہوں  اور غم کے مارے شادہوں   

ہو ترے ہر ایک  منگتے کا بھلا داتا پیا

دُم دبا کر بھا گ جائے شَیر بھی گر دیکھ لے

آپ کے دربار کا کُتّا شہا داتا پیا

کا ش! پھر لاہور میں   نیکی کی دعوت عام ہو

 



Total Pages: 406

Go To