Book Name:Wasail e Bakhshish

صبحِ صادِق ہوگئی سب آمِنہ کے گھر چلیں   

نور کی برسات ہوگی ہم نہاتے جائیں   گے

ذکرِ میلادِ مبارَک کیسے چھوڑیں   ہم بھلا

جن کا کھاتے ہیں   اُنہیں  کے گیت گاتے جائیں   گے

 

مُنْعَقِد کرتے رہیں   گے اجتماعِ ذکرونعت

دھوم اُن کی نعت خوانی کی مچاتے جائیں   گے

کرلو نیَّت خوب کوشِش کرکے ہم اپنا عمل

مَدنی انعامات پر ہردم بڑھاتے جائیں   گے

کرلو نیّت سنّتوں   کی تربیَت کے واسِطے

قافِلوں   میں   ہم سفر کرتے کراتے جائیں   گے

خوب برسیں   گی جنازے پر خُدا کی رحمتیں 

قبر تک سرکار کی نعتیں   سناتے جائیں   گے

حَشْر  میں    زیرِلِوائے حمد  اے  عطاؔر ہم

نعتِ سلطانِ مدینہ گُنگُناتے جائیں   گے

امام احمد رضا خان عَلَیہِ رَحمَۃُ الرَّحمٰن  لکھتے ہیں : ہمیشہ باو ضو رہنا مستحب ہے۔

(فتاوٰی رضویہ مُخَرَّجَہ ج۱ ص۷۰۲)

 

ایسا لگتا ہے مدینے جلد وہ بلوائیں   گے

ایسا لگتا ہے مدینے جلد وہ بلوائیں   گے

جائیں   گے جا کر انہیں   زخمِ جگر دکھلائیں   گے

وہ اگر چاہیں   گے تو ایسی نظر فرمائیں   گے

خوب روئیں  گے پچھاڑوں   پرپچھاڑیں   کھائیں   گے

خشک اشکِ عشق سے آنکھیں  ہیں   دل بھی سخت ہے

 



Total Pages: 406

Go To