Book Name:Wasail e Bakhshish

جب قبر میں   آئیں   گے تو قدموں   میں   گِروں   گا

خوب آنکھیں   ملوں   گا میں   تو پَیزارِ([1])نبی سے

عطارؔ ہے ایماں   کی حفاظت کا سُوالی

خالی نہیں   جائے گا یہ دربارِ نبی سے

مدنی پھول

فرمانِ مصطفٰی صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ:اَلْمُسْلِمُ مَنْ سَلِمَ الْمُسْلِمُوْنَ مِنْ لِّسَانِہٖ وَیَدِہٖ۔

ترجمہ:(کامل)مسلمان وہ ہے جس کی زبان اورہاتھ سے دوسرے مسلمان محفوظ رہیں۔

(بخاری ، ج۱، ص۱۵، الحدیث۱۰)

 

آج ہے جشنِ ولادت مرحبا یامصطَفٰے

آج ہے جشنِ ولادت مرحبا یامصطَفٰے

آج آئے جانِ رحمت مرحبا یامصطَفٰے

مرحبا مہرِ رسالت مرحبا یامصطَفٰے

مرحبا ماہِ نُبُوَّت مرحبا یامصطَفٰے

آمدِ شاہِ مدینہ مرحبا صد مرحبا

مرحبا اے جانِ رحمت مرحبا یامصطَفٰے

مرحبا آقا کی آمد مرحبا نورِ خدا

ہو گئی کافور ظلمت مرحبا یامصطَفٰے

آج دنیا میں   وِلاد ت مصطَفیٰ کی ہو گئی

خوب چمکی اپنی قسمت مرحبا یامصطَفٰے

کعبہ سجدے کو جھکا بُت سارے اَوندھے گر پڑے

آگئی شیطاں   کی شامت مرحبا یامصطَفٰے

 

آگئے سرکار ہر سُو بارشِ انوار ہے

جھومتے ہیں   ابرِ رَحمت مرحبا یامصطَفٰے

 



[1]     جوتی مبارک



Total Pages: 406

Go To