Book Name:Wasail e Bakhshish

نکلنے والی ہے اب روحِ مُضطَرجسم سے جاناں 

کرم! ایماں   کو ہے شیطاں   سے خطرہ  یارسولَ اللّٰہ

ہوئی جاتی ہے ہائے عمر ضائع جانتا ہوں   میں   

نہیں   آئے گا ہرگز وقت گزرا  یارسولَ اللّٰہ

کرم! عطاؔرِ بداطوار کے گلزار پر آقا

لگایا ہے خَزاں   نے سخت پہرا   یارسولَ اللّٰہ

 

ہُوا جا تا ہے دشمن سب زما نہ یارسولَ اللّٰہ

ہُوا جاتا ہے د شمن سب زمانہ یارسولَ اللّٰہ

سناؤں   اب کسے غم کا فسانہ یارسولَ اللّٰہ

مجھے چاروں   طرف سے دشمنوں   نے گھیر رکھا ہے

بچانا یارسولَ اللّٰہ بچانا یارسولَ اللّٰہ

جو اپنے تھے وُہی بیگانے ہو کر اب ستاتے ہیں 

کرم لِلّٰہ! یاشاہِ زمانہ! یارسولَ اللّٰہ

بھنور میں   پھنس چکی ہے ناؤ آقا ہائے کیا ہوگا!

شہا! جلدی سے پار آکر لگانا یارسولَ اللّٰہ

غم و آلام نے ہر سَمْت سے آقا جکڑ ڈالا

پئے غوث و رضا آکر چھڑانا یارسولَ اللّٰہ

 

شہا! گلزارِ سنّت پر خَزاں   نے کر دیا حملہ

بہاریں   سُنّتوں   کی پِھر دِکھانا یارسولَ اللّٰہ

غمِ دنیا میں   کیوں   روئیں   ہمیں  کردو نصیب آقا

تمہارے غم میں   ہی آنسو بہانا یارسولَ اللّٰہ

ڈرایا بلکہ مارا بھی مجھے یامصطَفٰے جس نے

 



Total Pages: 406

Go To