Book Name:Wasail e Bakhshish

کرم کر دو یہ سب کیسے سہو ں   گایارسولَ اللّٰہ

جو تم چا ہو گے تو ہونگی مِر ی سب مُشکِلیں آساں   

وَگرنہ نار میں  ، میں   جا پڑوں   گا یارسولَ اللّٰہ

تمہارا ہوں   غُلام اور ہے غلامی پر مجھے تو ناز

کرم سے ساتھ جنّت میں   چلوں   گا یارسولَ اللّٰہ

زَباں   پر ہوگا اُس دم یارسولَ اللّٰہ کا نعرہ

بروزِ حشر جس دم میں   اُٹھوں   گایارسولَ اللّٰہ

غمِ اُمّت میں   روتا دیکھ کر تم کو سرِ محشر

شہا! قابو میں   کیسے دل رکھوں   گا یارسولَ اللّٰہ

سُنو یامت سُنو میں   تو پکارے جاؤں   گا تم کو

جہاں   میں   جب تلک آقا جِیوں   گایارسولَ اللّٰہ

کرم فرما کہ ہو عطارؔ بھی اِس قَول کا مِصداق

’’تری خاطِرجیوں   گا اورمروں   گا‘‘ یارسولَ اللّٰہ

 

مجھے ہر سال تم حج پر بُلانا یارسولَ اللّٰہ

مجھے ہر سال تم حج پر بلانا  یارسولَ اللّٰہ

بُلانا اور مدینہ بھی دکھانا  یارسولَ اللّٰہ

رہے ہر سال میرا آنا جانا  یارسولَ اللّٰہ

بقیعِ پاک ہو آخِر ٹِھکانا  یارسولَ اللّٰہ

مِری  آنکھوں   میں   تم ہر دم سمانا  یارسولَ اللّٰہ

دلِ ویراں   کو جلووں   سے بسانا  یارسولَ اللّٰہ

نہ دولت دو نہ دو کوئی خزانہ یارسولَ اللّٰہ

سکھا دو عشق میں   رونا رُلانا  یارسولَ اللّٰہ

نظر بھر کر شہا! میں   دیکھ لوں   پھر گنبدِ خضرا

خُدارا پھر سبب کوئی بنانا  یارسولَ اللّٰہ

 



Total Pages: 406

Go To