Book Name:Wasail e Bakhshish

بَرَہنہ پا کھڑا کیسے رہوں   گا  یارسولَ اللّٰہ

سرِ محشر بلا کی دھوپ ہے آقا کرم کر دو

میں   کیا محروم کوثر سے رہوں   گا  یارسولَ اللّٰہ

گناہوں   کے کُھلے دفتر کھڑا ہوں   آہ ! مِیزاں   پر

نہیں  ہیں   نیکیاں   اب کیا کروں   گا یارسولَ اللّٰہ

ہے سر پر بارِعِصیاں   پُل صِراط اب پار ہو کیسے!

سنبھالو ورنہ دوزخ میں   گِروں   گا یارسولَ اللّٰہ

بروزِ حشر گر چشمِ کرم مجھ پر نہ کی تم نے

میں   جا کر کس کے دامن میں   چُھپوں   گایارسولَ اللّٰہ

 

میں   مجرِم ہوں   جہنَّم میں   اگر پھینکا گیا مجھ کو

ہَلاکت ہوگی ہائے ! کیا کروں   گا یارسولَ اللّٰہ

لپک کر آگ کے شُعلے لپٹتے ہوں   گے بربادی

کرم کر دو یہ سب کیسے سہوں   گا یارسولَ اللّٰہ

اندھیری آگ ہوگی روشنی بالکل نہیں   ہوگی

کرم کر دو یہ سب کیسے سہوں   گا یارسولَ اللّٰہ

وہاں  کانوں  میں  ، آنکھوں  میں  ، دَہَن میں  ، پیٹ میں  بھی آگ!

کرم کر دو یہ سب کیسے سہوں   گا یارسولَ اللّٰہ

جِبالِ نار ہوں   گے وادِیاں   بھی نار کی ہوں   گی

کرم کر دو یہ سب کیسے سہو ں   گا یارسولَ اللّٰہ

فِرِشتے ڈانٹتے ہوں   گے ہَتھَوڑے ما رتے ہوں   گے

کرم کر دو یہ سب کیسے سہو ں   گایارسولَ اللّٰہ

وہاں   سانپ اور بچّھو بھی مسلسل ڈَس رہے ہونگے

کرم کر دو یہ سب کیسے سہو ں   گایارسولَ اللّٰہ

غِذا دوزخ کی تُھوہر اور اُوپر کَھولتا پانی

کرم کر دو یہ سب کیسے سہو ں   گایارسولَ اللّٰہ

 

نہ مانگے موت آئے گی نہ بیہوشی ہی چھائیگی

 



Total Pages: 406

Go To