Book Name:Wasail e Bakhshish

’’ غیبت سے ہم کو بچا، یا الہٰی‘‘کے اُنیس حُرُوف کی نسبت سے نعت خوانی/ جلسے یا اجتماع میں   ہونے والی غیبت کی19مثالیں   

   ٭یہ مبلِّغ(یامولانایانعت خواں  ) کہاں   کھڑا ہو گیااب تو یہ مائیک نہیں  چھوڑے گا ٭ اُس کی آواز اچّھی ہے اس لئے قِراء ت سن کر لوگ داد دیتے ہیں   وَیسے تجوید کی کافی غَلطیاں   کرتا ہے ٭ اس کے تَلفُّظ غَلَط ہوتے ہیں   ٭اِس کو تقریر کرنی ٭یا نعت پڑھنی ہی کہاں   آتی ہے٭ چلو!چلو! اب یہ لمبی کریگا٭ نوٹ چلتے ہیں   تو اِس کی آوازکُھل جاتی ہے ٭ ہمارے شہر میں   آنے کیلئے تو اس نے ہوائی جہاز کا رِیٹَرن ٹکٹ مانگا تھا ٭اس نعت خواں   کا مزاج تو آسمان پر رہتا ہے ٭اِس کو تو بس ایک ہی طرز آتی ہے ٭یہ تو دوسرے نعت خوانوں   کی طرزیں   چُراتا ہے ٭ اِس نے بیان کی تیّاری نہیں   کی اِدھر اُدھر کی باتیں   کر کے وَقت گزار رہا ہے ٭آیتیں   تو پڑھتا نہیں  بس قصّے کہانیاں   سناتا ہے ٭اُس مُقرِّر کی آواز اچّھی ہے مگر اس کی تقریر میں   خاص مَواد نہیں   ہوتا ٭خطاب بڑا جو شیلا تھا مگر دلائل میں   دم نہیں   تھا ٭ہمارے خطیب صاحِب اپنے بیان میں   سنّت ایک نہیں   بتاتے بس لٹھ لیکر بدمذہبوں   کے پیچھے پڑے رہتے ہیں   ٭آج خطیب صاحِب کے بیان میں   مزہ نہیں   آیا ٭ وہ مولانا صاحِب جلسے میں   دیر سے آنے کے عادی ہیں  ٭ فُلاں   کی تقریر میں   بس جوش ہی جوش ہوتا ہے اپنے پلّے کچھ بھی نہیں   پڑتا۔

 ’’ غیبتیں   کرنے والے قیامت میں   کُتے کی شکل میں   اُٹھیں   گے‘‘

کے چالیس حُرُوف کی نسبت سے نعت خوانوں   کے مابین ہونے والی غیبتوں   کی40مثالیں 

        دعوتِ اسلامی کے اِشاعتی ادارے مکتبۃُ المدینہ کی مطبوعہ 505 صَفحات پر مشتمل کتاب ، ’’ غیبت کی تباہ کاریاں  ‘‘ صَفْحَہ 410تا411پر ہے:’’نعت خوانی ‘‘ نہایت عمدہ عبادت ہے ، سُریلی آوازبے شک ربُّ العزَّت عَزَّوَجَلَّکی عنایت ہے مگر اس میں   امتحان بہت سخت ہے ، جسے اِخلاص مل گیا وُہی کامیاب ہے۔بعض نعت خواں   ماشائَ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ زبردست عاشقِ رسول ہوتے ہیں   جو کہ بِغیر کسی دُنیوی لالچ کے آنکھیں   بند کئے عشقِ رسول میں   ڈوب کر نعت شریف پڑھتے ہیں   اور سامِعین کے دلوں   کو تڑپا کررکھ دیتے ہیں  جبکہ بعض لا اُبالی چَنچَل اور انتِہائی غیر سنجیدہ ہوتے ہیں   ، اِس طرح کے نعت خوانوں   میں   جن بدنصیبوں   کا دل خوفِ خدا  عَزَّوَجَلَّ سے خالی ہوتا ہے، وہ پیچھے سے ایک دوسرے پر جی بھر کر تنقیدیں   کرتے، خوب خوب غیبتیں   کرتے ، آوازوں   کی نقلیں   اُتار کرٹھیک ٹھاک مذاق اُڑاتے اوراوپر سے زور دار قہقہے لگاتے ہیں  ۔اللّٰہرَحمٰن عَزَّوَجَلَّحقیقی مدنی نعت خواں   حضرت سیِّدُنا حسان رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ کے صدقے انہیں   بھی عشقِ رسول میں   رونے رُلانے والا مخلص نعت خواں   بنائے۔اٰمین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمایسے نعت خوانوں   کی اصلاح کے جذبے کے تحت ان کے درمیان ہونے والی



Total Pages: 406

Go To