Book Name:Karamaat e Farooq e Azam رضی اللہ تعالیٰ عنہ

لوگوں کی اجازت سے بَیتُ المال سے شہد لینا

حضرتِ سیِّدُنا فاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ ایک بار بیمار ہوئے، طبیبوں نے علاج میں شَہْد تجویز کیا ، بیتُ المال میں شہد موجود تھا لیکن مسلمانوں کی اجازت کے بِغیرلینے پر راضی نہ تھے، چُنانچِہ اِسی حالت میں مسجِد میں حاضِر ہوئے اور مسلمانوں کو جَمْع کر کے اجازت طلب کی، جب لوگوں نے اِجازت دی تو اِستِعما ل فرمایا۔(طبقاتِ ابنِ سعد ج۳ ص۲۰۹)

مَسلسَل روزے رکھتے

حضرت ِسیِّدُناابنِ عمر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا فرماتے ہیں :حضرتِ سیِّدُناعمرفاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ وِصال سے دو سال تک لگا تار روزے رکھتے رہے۔دوسری روایت میں ہے :بَقَرہ عیدو عیدُ الفِطْر اور سفر کے علاوہ حضر ت سیِّدُنا عمرفاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ مسلسل روزے رکھتے تھے۔ (مناقب عمر بن الخطاب لابن الجوزی ص۱۶۰)

سات یا نو لُقمے

حضرتِ سیِّدُنا فاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ 7 یا9 لقموں سے زیادہ کھانا نہیں کھاتے تھے۔(اِحیاءُ الْعُلومج۳ص۱۱۱)

اونٹوں کے بدن پر تیل مل رہے تھے

حضرتِ سیِّدُناعمرفاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ ایک مرتبہ صدقے کے اونٹوں کے بدن پر قَطران(یعنی تیل )مل رہے تھے ،ایک شخص نے عرض کی : حضرت! یہ کام کسی غلام سے کروا لیتے! جواب دیا :مجھ سے بڑھ کر کون غلام ہو سکتا ہے، جو شخص مسلمانوں کا والی ہے وہ

 



Total Pages: 48

Go To