Book Name:Karamaat e Farooq e Azam رضی اللہ تعالیٰ عنہ

قَبْروالے سے گفتگو

مُدَّعائے رسول،رفیقِ رسول،مُشیرِرسول،جاں نثارِرسول،امیرُالْمُؤمِنِین حضرتِ سیِّدُناعُمَر فاروقِ اَعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ ایک بار ایک صالِح(یعنی نیک پرہیز گار) نوجوان کیقَبْر پر تشریف لے گئے اورفرمایا: اے فُلاں ! اللہ عَزَّوَجَلَّ نے وعدہ فرمایا ہے: وَ لِمَنْ خَافَ مَقَامَ رَبِّہٖ جَنَّتَانِ ﴿ۚ۴۶ ۲۷،الرحمٰن:۴۶)

ترجَمۂ کنزالایمان: اور جواپنے رب کے حُضُور کھڑے ہونے سے ڈرے اُس کے لئے دو جنّتیں ہیں۔

اے نوجوان!بتا! تیرا قَبْر میں کیا حال ہے؟ اُس صالِح(یعنی باعمل) نوجوان نے قَبْرکے اندر سے آپ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ کا نام لے کر پکارا اوربآوازِ بلند دو مرتبہ جواب دیا: قَدْ اَعْطَانِیْہِمَا رَبِّیْ عَزَّ وَجَلَّ فِی الْجَنَّۃِ۔ میرے رب عَزَّوَجَلَّ نے یہ دونوں جنّتیں مجھے عطا فرما دی ہیں۔ (تاریخ دمشق لابن عساکِر ج۴۵ص۴۵۰) اللہ عَزَّ وَجَلَّ کی اُن پر رحمت ہو اور اُن کے صدْقے ہماری بے حِساب مغفِرت ہو۔ اٰمین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

دے بہرِعُمَر اپنا ڈر یاالٰہی

دے عشقِ شہِ بَحْروبَر یاالٰہی

اٰمین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب! صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد


 

 



Total Pages: 48

Go To