Book Name:Karamaat e Farooq e Azam رضی اللہ تعالیٰ عنہ

کریم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی شَرْم اور آخِرت کا ڈَر نہ رہا ۔ اعلیٰ حضرت، مجدِّدِ دین وملّت رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہفرماتے ہیں :

دن لَہْو۱؎میں کھونا تجھے شب صبْح تک سونا تجھے ۱؎کھیل کود

شرمِ نبی، خوفِ خدا، یہ بھی نہیں وہ بھی نہیں (حدائقِ بخشش)

مسجد یں ہماری ویران، مسلمانوں سے سِنیما وتماشے آباد، ہر قسم کے عُیُوب مسلمانوں میں موجود ، ناجائز رسمیں ہم میں قائم ہیں ، ہم کس طر ح عزّت پا سکتے ہیں !جیسے کسی نے کہا ہے :

وائے ناکامی! مَتاعِ کارواں جاتا رہا

کارواں کے دِل سے اِحساسِ زِیاں جاتا رہا

3 بیماریاں

مسلمانوں کی اَصْل بیماری تو اَحکامِ خدا وسُنّتِ مصطَفٰے کو چھوڑ نا ہے، اب اِس مَرَض کی وجہ سے اور بہت سی بیماریاں پیدا ہو گئیں۔ مسلمانوں کی بڑی بڑی تین بیماریاں ہیں : اوّل رو زانہ نئے نئے مذہَبو ں کی پیداوار اور ہر آواز پر مسلمانوں کا آنکھیں بند کر کے چل پڑنا۔ دو سرے مسلمانوں کی آپس کی ناچاقیاں ، عداوَتیں اور مُقدَّمہ بازیاں۔ تیسرے جاہِل لوگوں کی گھڑی ہوئی خِلافِ شَرع یا فُضول رَسمیں ، اِن تین قِسْم کی بیماریوں نے مسلمانوں کو تباہ کر ڈالا ، بر باد کر دیا ، گھر سے بے گھر بنادیا، مقرو ض کردیا غرضیکہ ذِلّت کے گڑھے میں دھکیل دیا ۔


 

 



Total Pages: 48

Go To