Book Name:Meethay Bol

وَاٰلہٖ وَسَلَّم پڑھ لے تو کفر و شرک کی ساری گندگی سے پاک ہوجاتا ہے اس کی زَبان سے نکلا ہوا یہ کَلِمۂ طیِّبہ اس کے گزَشتہ تمام گناہوں کے مَیل کُچیل کو دھوڈالتا ہے ۔ زَبان  سے اداکئے ہوئے اس کلمۂ پاک کے با عِث وہ گناہوں سے ایسا پاک و صاف ہوجاتا ہے جیسا کہ اُس روز تھا جس رو ز اس کی ماں نے اسے جنا تھا ۔  یہ عظیم مَدَنی اِنقِلاب دل کی تائید کے ساتھ زَبان سے ادا کئے ہوئے کلمے شریف کی  بدولت آیا ۔

ہر بات پر سال بھر کی عبادت کاثواب

    اے کاش ! ہم بھی اپنی زَبان کا صحیح استِعمال کر نا سیکھ لیں  ۔ اللہ  و رسولعَزَّ وَجَلَّ و  صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم   کی مرضی کے مطابق اگر زَبان  کو چلایا جائے تو جنَّت میں گھر تیّار ہوجائیگا ۔  اس زَبان سے ہم تلاوتِ قرآن پاک کریں ، ذکرُ اللہ عَزَّ وَجَلَّ کریں ، دُرُود وسلام کا وِرد کریں ، خوب خوب نیکی کی دعوت دیں تو اِن شاءَ اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  ہمارے وار ے ہی نیارے ہوجائیں گے ۔  مُکا شَفَۃُ الْقُلُوب میں ہے : حضرتِ سیِّدُنا موسیٰ کلیم اللہعَلٰی نَبِیِّناوَعَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلام نے بار گاہِ خداوندی عَزَّ وَجَلَّ  میں عرض کی : اے ربِّ کریم عَزَّ وَجَلَّ ! جواپنے بھائی کو بلائے اور اسے نیکی کا حکم کرے اور برائی سے روکے اُس شخص کا بدلہ کیا ہوگا؟فرمایا : ’’میں اس کے ہر کلمے کے بدلے ایک سال کی عبادت کا ثواب لکھتا ہوں اوراسے جہنَّم کی سزادینے میں مجھے حیا آتی ہے ۔ ‘‘(مکاشفۃُ القلوب ص۴۸ دارالکتب العلمیۃ بیروت)

عاشقانِ رسول کے میٹھے بول کی بَر کات

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!  نیکی کی بات بتانے گناہ سے نفرت دلانے اور ان کاموں کیلئے کسی پر انفِرادی کوشِشکا ثواب کمانے کیلئے یہ ضَروری نہیں کہ جس کو سمجھا یا وہ مان جائے تو ہی ثواب ملیگا بلکہ اگر وہ نہ مانے تب بھی  اِن شاءَ اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  ثواب ہی ثواب ہے اور اگر آپ کی انفِرادی کوشش سے کسی نے گناہوں سے توبہ کر کے سنّتوں بھری زندگی گزار نی شروع کر دی پھرتو اِن شاءَ اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  آپ کے بھی وارے نیارے ہو جائیں گے ۔ آیئے اِس ضِمن میں اِنفرادی کوشِش کی ایک مَدَنی بہار سنتے چلیں چُنانچِہ شہر قُصُور( پنجاب ، پاکستان) کے ایک نوجوان اسلامی بھائی کی تحریر بالتَّصَرُّف پیش کرتا ہوں : ’’ میں اُن دنوں میٹرک کا طالبِ علم تھا، ‘‘ بُری صُحبت کے باعِث زندگی گناہوں میں بسر ہو رہی تھی، مزاج بے حد غُصیلا تھا اور بد تمیزی کی عادتِ بد اِس حد تک پَہنچ چکی تھی کہ والِدصاحِب کُجا داداجان اور دادی جان کے سامنے بھی قینچی کی طرح زَبان چلاتا ۔ ایک روزتبلیغِ قراٰن وسنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کا ایک مَدَنی قافِلہ ہمارے مَحَلّے کی مسجِد میں آ پہنچا ، خدا کا کرنا ایسا ہوا کہ میں عاشِقانِ رسول سے ملاقات کیلئے پَہنچ گیا ۔  ایک اسلامی بھائی نے انفرادی کوشِش کرتے ہوئے مجھے درس میں شرکت کی دعوت پیش کی، ان کے میٹھے بول نے مجھ پر ایسا اثر کیا کہ میں ان کے ساتھ بیٹھ گیا ۔ انہوں نے درس کے بعد انتِہائی میٹھے انداز میں مجھے بتایا کہ چند ہی روز بعدصَحرائے مدینہ مدینۃُ الاوَلیاء ملتان شریف میں دعوتِ اسلامی کا تین روزہ بینَ الاقوامی سنَّتوں بھرا اجتِماع ہو رہا ہے آپ بھی شرکت کر لیجئے ۔  ان کے دَرس نے مجھ پر بَہُت اچّھا اثر کیا تھا لہٰذا میں انکارنہ کر سکا ۔  یہاں تک کہ میں سنّتوں بھرے اجتِماع (صحرائے مدینہ، ملتان) میں حاضِر ہو گیا ۔  وہاں کی



Total Pages: 17

Go To