Book Name:Aala Hazrat رحمۃ اللہ علیہ Ki Infiradi Koshishain

جلوے دکھائی دیتے ہیں ، بالخصوص فتاوٰی رضویہ توغَوَّاصِ بحرِفِقہ کے لئے آکسیجن کا کام دیتا ہے ۔آپ رحمۃاللہ تعالٰی علیہ نے قرآنِ مجید کا ترجَمہ کیاجو اُردو کے موجودہ تراجم میں سب پر فائِق ہے۔آپ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہکے ترجَمہ کا نام  ’’ کنزُالایمان ‘‘  ہے ۔جس پر آپ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ کے خلیفہ صدر الافاضل مولانا سَیِّد نعیم الدین مُراد آبادی رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ نے حاشیہ خزائن العِرفانلکھا ہے۔۲۵صفَر الْمُظَفَّر۱۳۴۰ھ   بمطابق ۱۹۲۱ء کو جُمُعَۃُ الْمبارَککے دن ہندوستان کے وقت کے مطابق ۲ بج کر ۳۸ منٹ پر، عین اذان کے وقت اِدھر مُؤَذِّن نے حَیَّ عَلَی الفَلاح کہا اور اُدھر اِمامِ اَہلسُنَّت ، مُجَدِّدِ دین ومِلّت، عالِمِ شَرِیْعَت، پیرِطریقت، حضرتِ علّامہ مولٰینا الحاج الحافِظ القاری شاہ امام اَحمد رَضا خان علیہ رحمۃ الرحمن  نے داعئی اَجل کو لبیک کہا۔ آپ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ کا مزارِپُراَنوار بریلی شریف  (ہند) میں آج بھی زیارت گاہِ خاص و عام بنا ہوا ہے۔

          اعلیٰ حضرت  عَلَیْہِ رَحمَۃُ ربِّ الْعِزَّت  حافظ ِ قراٰن، فقہیہ، مفتی، محدث ، مدرس ہونے کے ساتھ ساتھ دینِ اسلام کے عظیم مبلِّغ بھی تھے ۔ آپ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ نے اپنی تحریروتقریر میں جابجا نیکی کی دعوت پیش کی ہے۔ ایسی ہی 20 حکایات  ’’ اعلیٰ حضرت کی اِنفرادی کوششیں  ‘‘  کے نام سے دعوتِ اسلامی کے عِلمی شعبے کی مجلس المدینۃ العلمیۃ کی طرف سے پیش کی جارہی ہیں ۔ یاد رکھئے کہ  ایک کو الگ سے نیکی کی دعوت دینے  (یعنی اسے سمجھانے) کو  ’’ اِنفرادی کوشش ‘‘  کہتے ہیں جبکہ  سنّتوں بھرے اجتماع میں بیان کے ذریعے، مسجِد درس، چوک درس وغیرہ کے ذریعے مسلمانوں تک نیکی کی دعوت پہنچانے  (یعنی انہیں سمجھانے ) کو  ’’ اجتماعی کوشش  ‘‘ کہتے ہیں ۔یقینا نیکی کی دعوت کے کام میں اِنفرادی کوشش کو بڑا عمل دَخل ہے حتّٰی کہ ہمارے میٹھے میٹھے آقا، مدینے والے مصطَفٰے صلی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہ وسلم نیز سب کے سب اَنبیائِ کرام علیہم الصلوۃ والسلام نے نیکی کی دعوت کے کام میں اِنفرادی کوشش فرمائی ہے۔ہمیں بھی چاہئیے کہ انفرادی کوشِش کے ذَرِیعے خوب خوب نیکی کی دعوت دیتے جائیں اور ثواب کا خزانہ لوٹتے جائیں ۔انفرادی کوشش کے بارے میں تفصیلی معلومات حاصل کرنے کے لئے شیخِ طریقت امیرِ اہلسنّت بانیٔ دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطّاؔر قادری دامت برکاتہم العالیہ کے بیان کے تحریری گلدستے ’’ جنّتی محل ‘‘  اور مکتبۃ المدینہ کی شائع کردہ کتاب ’’ انفرادی کوشش ‘‘  کا ضرورمطالعہ کیجئے اور عملی طریقہ سیکھنے کے لئے دعوتِ اسلامی کے مَدَنی قافلوں میں عاشقانِ رسول کے ساتھ سفر اختیار کیجئے ۔ اللہ تعالٰی ہمیں  ’’ اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش ‘‘  کرنے کے لئے مَدَنی انعامات پر عمل کرنے اور مَدَنی قافلوں کا مسافر بنتے رہنے کی توفیق عطا فرمائے اور دعوت ِ اسلامی کی تمام مجالس بشمول مجلس المدینۃ العلمیۃکو دن پچیسویں رات چھبیسویں ترقی عطا فرمائے ۔آمین بجاہ النبی الامین صلی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہ وسلم

شعبہ اِصلاحی کتب ،   مجلسِ اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیّہ {دعوتِ اسلامی} 

۱۶ربیع النور ۱۴۳۰ھ، 14 مارچ   2009ء

(2)   نماز میں غلطی کرنے والے پر انفرادی کوشش

          اعلیٰ حضرت  عَلَیْہِ رَحمَۃُ ربِّ الْعِزَّت  نَماز کے بعد دہلی  (ھند)  کی ایک مسجدمیں  مشغولِ وظیفہ تھے ۔ ایک صاحب آئے اور آپ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہکے قریب ہی نماز پڑھنے لگے۔جب تک قیام میں رہے مسجد کی دیوار کو دیکھتے رہے ، رُکوع میں بھی سر اوپر اٹھاکر سامنے دیوار ہی کی طرف نظر رکھی ۔جب وہ نماز سے فارِغ ہوئے تواس وقت تک اعلیٰ حضرت  عَلَیْہِ رَحمَۃُ ربِّ الْعِزَّت بھی اپنا وظیفہ مکمل کر چکے تھے ۔ آپ رحمۃاللہ تعالٰی علیہ نے انہیں اپنے پاس بلاکرشرعی مسئلہ سمجھایا کہ  ’’ نماز میں کس کس حالت میں کہاں کہاں نگاہ ہونی چاہئے۔  ‘‘ پھر فرمایا: ’’ بحالتِ



Total Pages: 20

Go To