Book Name:Allah Walon Ki Batain Jild 1

کوشش ہوتی ہے کہ ترجمہ حتی المقدورآسان اورعام فہم کیاجائے نیزاسے اُردوکے قالب میں   ڈھالتے وقت اردوکے محاورات وغیرہ کاخوب خیال رکھاجائے تاکہ کم پڑھے لکھے اسلامی بھائی بھی سمجھ سکیں   ۔ پیش نظرکتاب میں   بھی اس کی بھرپورکوشش کی گئی ہے ۔

 ( 3 )ترجمۂ قرآنی آیات :  

            کتاب میں   موجودقرآن کریم کی آیاتِ مُقَدَّسَہ کاترجمہ خُصُوصیت کے ساتھ ،  مجدداعظم،  سیِّدُنااعلیٰ حضرت شاہ امام احمدرضاخان عَلَیْہِ رَحْمَۃُالرَّحْمٰن ( مُتَوَفّٰی1340ھ ) کے شہرۂ آفاق ترجمۂ قرآن ’’ کنزالایمان  ‘‘ سے لیاگیاہے ۔  نیز کتاب کی عبارت میں   اگر کہیں   قرآنی آیات مبارکہ سے اِقتباس ( [1] )کیاگیاہے تواس کا ترجمہ کرتے وقت بھی ’’ کنزالایمان  ‘‘ کے ترجمہ کوپورے طورپرملحوظ رکھاگیاہے ۔

 ( 4 )شروحات اورتراجم سے مراجعت:

            ترجمہ کرتے وقت یہ کوشش رہی ہے کہ شُرُوحات اور اَکابرین اہلسنّت دَامَتْ فُیُوْضُھُمْ کے تراجم کے آئینے میں   ترجمہ کیاجائے  ۔ جن شروحات وتراجم کومد ِنظررکھاگیا :    ( 1 ) فَتْحُ الْبَارِی شَرْحُ الصَّحِیْحِ الْبُخَارِی ( 2 )  عُمْدَۃُ الْقَارِی شَرْحُ الصَّحِیْحِ البُخَارِی ( 3 ) نُزْہَۃُ الْقَارِی شَرْحُ الصَّحِیْحِ البُخَارِی ( اُردُو )   ( 4 ) فُیُوْضُ الْبَارِی شَرْحُ الصَّحِیْحِ الْبُخَارِی ( اُردُو )  ( 5 )  شَرْحُ صَحِیْحِ مُسْلِمٍ لِلنَّوَوِی ( 6 ) فَیْضُ الْقَدِیْرشَرْحُ الْجَامِعِ الصَّغِیْر ( 7 ) مِرْقَاۃُ الْمَفَاتِیْح شَرْحُ مَشْکٰوۃِ الْمَصَابِیْح ( 8 ) مِرْاٰۃُ الْمَنَاجِیْح  شَرْحُ مِشْکٰوۃِ الْمَصَابِیْح ( اُردُو )  ( 9 ) اَشِعَّۃُ اللَّمْعَات ( 10 )  اَلشِّفَاء ( 11 ) اَلْمَوَاھِبُ اللَّدُنِّیَّۃ ( 12 )  اَلرَّوْضُ الْاُنُف  ( 13 ) اَلْخَصَائِصُ الْکُبْرٰی ( 14 ) مَدَارِجُ النَّبُوَّۃ ( 15 ) حُجَّۃُ اللہ عَلَی الْعَالَمِیْنوغیرہ ۔

            بنیادی طورپریہ کتاب تصوف وطریقت سے تعلق رکھتی ہے،  اس میں   جابجاتصوف اورصوفیائے کرام رَحِمَہُمُ اللہ السَّلَام کامبارک تذکرہ ہے،  ان مضامین وعبارات کاترجمہ کرتے وقت تصوف کی درج ذیل  کتب کوبھی پیش نظر رکھا گیا :    ( 1 ) اِحْیَاءُ عُلُوْمِ الدِّیْن ( 2 ) اِتِّحَافُ السَّادَّۃِ الْمُتَّقِیْن ( 3 ) اَلرِّسَالَۃُ الْقُشَیْرِیَّۃ ( 4 ) اَلْفُتُوْحَاتُ الْمَکِّیَّۃ  ( 5 ) رَوْضُ الرِّیَاحِیْن ( 6 ) اَلطَّبَقَاتُ الکُبْرٰی لِلشَّعْرَانِی ( 7 ) اَلْاِبْرِیْز ( 8 ) کَشْفُ الْمَحْجُوْب  ( 9 ) عَوَارِفُ الْمَعَارِف  ( 10 ) جامِعُ کَرَامَاتِ الْاَوْلِیَاء وغیرہ ۔

 ( 6 ) … عُنوانات وبندسازی :  

            مطالعہ کرنے والوں   کی دلچسپی برقراررکھنے اورذوق بڑھانے کی غرض سے متعلقہ مضمون کے مطابق عنوانات  ( درمیانی وبغلی سرخیوں   )  کا اِہتمام کیاگیاہے اورایک مضمون کی تکمیل کے بعددوسرامضمون نئے پیرے اورنئی سطرسے شروع کیاگیاہے کیونکہ عنوانات وبندسازی  ( یعنی پیراگرا فنگ  ) ،   کسی بھی کتاب کے حسنِ صوری کی عکاسی کرتے ہیں   ۔

 ( 7 )مشکل اَلفاظ کے معانی واِعراب :  

            اس بات کااِہتمام کیاگیاہے کہ ترجمہ میں   جہاں   کہیں   عربی عبارات یامشکل الفاظ آئے ہیں   ان پراِعراب بھی لگایاگیاہے اورہلالین ’’  ( …  )  ‘‘ میں   مرادی معانی بھی لکھ دیئے گئے ہیں   تاکہ پڑھنے والوں   کوآسانی رہے  ۔

 ( 8 )آیات مبارکہ کی پیسٹنگ :  

            یہ ایک مسلمہ حقیقت ہے کہ کمپیوٹر ( COMPUTER ) نے انسانی ترقی میں   بڑااَہم کردار اداکیاہے  ۔  اسی کمپیوٹر کی بدولت اب کتابوں   کی ہاتھ سے کتابت کے کٹھن ،  جاں   سوزاوروقت طلب مرحلہ سے نجات مل گئی اوراب کتابوں   کو ان پیج ( INPAGE ) یامائیکروسوفٹ آفس ورڈ ( MICROSOFT OFFICE WORD )  سے کمپوز کرلیا جاتا ہے مگراس کاایک نقصان  ( SIDE EFFECT ) یہ ہواکہ کتابت کی غلطیاں   اُردُوکتب کا مقدر بن کے رہ گئیں   جوکہ ہاتھ سے کتابت کے مقابلے میں   زیادہ ہوتی ہیں   کیونکہ یہ تجربہ سے ثابت ہے کہ ہاتھ سے کتابت میں   غلطیاں   بہت کم ہوتی ہیں   ۔ مسئلہ صرف عام جملوں   کانہیں   بلکہ عقائداور فقہی مسائل کاہے کہ ان میں   ’’ ناجائز ‘‘  کا ’’ جائز ‘‘  اور ’’ جائز ‘‘ سے ’’ ناجائز ‘‘ ہوجاتاہے  ۔  اسی طرح قرآنی آیات مبارکہ کامسئلہ تھاکہ کمپوزنگ کی صورت میں   اس میں   بھی کہیں   کوئی حرف رہ جاتااور کہیں   کوئی حرکت ( یعنی زبر،  زیروغیرہ )  چھوٹ جاتی ہے ۔ ہماری خوش قسمتی کہ کچھ عرصہ قبل دعوتِ اسلامی کو ایک دردمند اسلامی بھائی نے تین لاکھ روپے کی مالیت کاQ.P.S ( قرآن پبلشنگ سوفٹ ویئر )  اور اس کی ڈیوائس  ( DEVICE )  خریدکرہدیہ  ( DONATE ) کیا جس کی مددسے قرآنِ کریم کا مسودہ تیارکیاگیا ۔ قبلہ شیخ طریقت ،   امیراہلسنّت ،  بانی ٔ دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمدالیاس عطّار قادری رضوی ضیائی دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَۃ کی خواہش تھی کہ اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَّۃکی کتب میں   بھی اس سوفٹ ویئرسے آیات پیسٹ کی جائیں   ۔  چنانچہ،  علمیہ میں   موجود کمپیوٹرکے ماہرایک مدنی عالِم مَدَّظِلُّہُ الْعَالِینے اس سوفٹ ویئرسے مختلف سائزکیP.D.F فائلز بنالیں   اوراب اس کی مددسے ’’ اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَّۃ  ‘‘ کی کتب میں   آیات مبارکہ پیسٹ ( PASTE )  کی جاتی ہیں   ۔  کیونکہ قبلہ امیراہلسنّت مَدَّظِلُّہُ الْعَالِیکی خواہش کے اِحترام میں  ’’ اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَّۃ  ‘‘ کی مجلس نے یہ اصول بنالیاہے کہ آیات قرآنیہ کی کمپوزنگ کے بجائے ہرآیت طیبہ کو پیسٹ کیاجائے گاجس کے بغیروہ کتاب نامکمل تصورکی جائے گی ۔ پیش نظرکتاب میں   بھی تقریباً تمام آیات مبارکہ پیسٹ کی گئی ہیں   ۔

 ( 9 ) … حواشی اَز علمیہ :  

 



[1]     اقتباس اصل میں   وہ کلام ہے جو قرآن وحدیث کے کچھ الفاظ کو اپنے ضمن میں   لئے ہوئے ہو لیکن اس سے یہ مراد نہیں  کہ یہ کلام قرآن وحدیث کا ہی ایک جزو ہے۔جیسا کہ علمائے علم البدیع رَحِمَہُمُ اللہ تَعالٰی فرماتے ہیں   : ’’ ( بطورِ اقتباس )  الفاظ میں   تبدیلی یا کمی نقصان نہیں   دیتی۔‘‘



Total Pages: 273

Go To