Book Name:Allah Walon Ki Batain Jild 1

تشریف لے جاتے ہوئے دیکھا ۔  ‘‘    ( [1] )

حضرت سیِّدُناشَدّادبِن اُسَیْدرَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ

            حضرت سیِّدُناشَدَّادبن اُسَیْدرَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کوبھی اہلِ صفہ میں   ذکرکیاگیا ہے  ۔  اس بات کو آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کے پڑپوتے عَمْرو بن قَـیْظِی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہ الْقَوِی اپنے دادا عامر بن شدادبن اسید کے حولے سے روایت کرتے ہیں   کہ حضرت شدادبن اسیدرَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ،  حضور نبی ٔاکرم صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی خدمت میں   حاضر ہوئے توآپ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے انہیں   صفہ میں   ٹھہرا یا ۔

آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کی ایک خصوصیّت :  

 ( 1292 ) … حضرت سیِّدُناعَمْرو بن قَیْظِی بن عَامِر بن شَدَّادبن اُسَیْدسُلَمِی مَدَنیعَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہ الْغَنِی فرماتے ہیں :  میرے والدنے مجھے میرے پرداداحضرت سیِّدُناشَدَّاد رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کے بارے میں   بتایاکہ وہ بارگاہِ رسالتعَلٰی صَاحِبِہَاالصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام میں   حاضرہوئے اورآپ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے ہاتھ پر ہجرت کی بیعت کی ۔  پھر کچھ عرصہ بعدبیمارہو گئے تو آپ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے استفسارفرمایا :   ’’ اے شَدَّاد ! کیا

 

ہوا ؟  ‘‘  عرض کی :   ’’ یارسول اللہ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم !  بیمارہوں    ۔ کاش  ! میں   چند باربُطْحَان کا پانی پی لوں    ( تو صحت یاب ہو جاؤں    )   ۔  ‘‘  آپ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے ارشادفرمایا :   ’’ تمہیں   کس چیزنے ا س سے باز رکھا ہے ؟  ‘‘  عرض کی :   ’’ بیعت ِ ہجرت نے ۔  ‘‘  ارشاد فرمایا :   ’’ جاؤ ! تم جہاں   کہیں   بھی رہوصاحبِ ہجرت ہی ہو ۔  ‘‘    ( [2] )

حضرت سیِّدُناصُہَیْب بِن سِنَانرَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ

            حضرت سیِّدُناصُہَیْب بن سِنَان رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کوحضرت سیِّدُنا ابوہریرہ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کے حوالے سے اہلِ صفہ میں   ذکرکیاگیاہے ۔ ہم سابقین اولین میں   آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ  کے احوال بیان کرچکے ہیں   ۔

دو نبیوں  عَلَیْہِمَاالصَّلٰوۃُوَالسَّلَام کی دُعا :  

 ( 1293 ) … حضرت سیِّدُنا صُہَیْب رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ سے مروی ہے کہ نور کے پیکر،   تمام نبیوں   کے سَرْوَرصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم یہ دُعا فرمایا کرتے تھے :   ’’ اَللّٰھُمَّ لَسْتَ بِاِلٰہٍ اِسْتَحْدَثْنَاہُ،   وَلَابِرَبٍّ اِبْتَدَعْنَاہُ،   وَلَاکَانَ لَنَاقَبْلَکَ مِنْ اِلٰہٍ نَّلْجَأُاِلَیْہِ وَ نَدَعُکَ،   وَلَااَعَانَکَ عَلٰی خَلْقِنَااَحَدٌفَنُشْرِکَہٗ فِیْکَ،   تَبَارَکْتَ وَتَعَالَیْتَ ۔ ترجمہ :   اے اللہ عَزَّوَجَلَّ !  تو ایسا معبودوپرورْدْگار نہیں   جسے ہم نے خود بنایا ہو اور نہ تجھ سے پہلے ہمارا کوئی معبود تھاکہ ہم اس کی پناہ لے لیں   اورتجھے چھوڑ دیں   اور ہماری تخلیق میں   تیرا کوئی مددگار نہیں   کہ ہم اسے تیرا شریک ٹھہرائیں   ۔  تیری ذات با برکت ہے اور تو بلند شان کا مالک ہے ۔  ‘‘  حضرت سیِّدُنا کَعْب رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ فرماتے ہیں :  ’’ اللہعَزَّوَجَلَّ کے نبی حضرت سیِّدُنا داؤدعَلٰی نَبِیِّنَاوَعَلَیْہِ الصَّلٰوۃُوَالسَّلَام بھی اسی طرح دُعا کیا کرتے تھے ۔  ‘‘    ( [3] )

حضرت سیِّدُناصَفْوَان بِن بَیْضَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ

            حضرت سیِّدُنا صَفْوَان بن بیضاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کوحافظ ابوعبداللہرَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ کے حوالے سے اہلِ صفہ میں   ذکرکیاگیاہے ۔ آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہکاتعلق قبیلہ بنوفِہر سے ہے ۔  بدری صحابی ہیں   ۔ حضور نبی ٔپاک صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے انہیں   ایک سَرِیَّہ  ( یعنی جنگ  ) میں   بھی روانہ فرمایا تھا ۔  حضرت سیِّدُناعبداللہبن جَحْشرَضِیَ

 

 اللہ تَعَالٰی عَنْہ فرماتے ہیں :  ’’ یہ آیت مقدسہ انہی کے بارے میں   نازل ہوئی :  

اِنَّ الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا وَ الَّذِیْنَ هَاجَرُوْا وَ جٰهَدُوْا فِیْ سَبِیْلِ اللّٰهِۙ-اُولٰٓىٕكَ یَرْجُوْنَ رَحْمَتَ اللّٰهِؕ- ( پ۲،  البقرۃ :  ۲۱۸ )

ترجمۂ کنز الایمان:  وہ جوایمان لائے اور وہ جنہوں   نے اللہ کے لئے اپنے گھربار چھوڑے اور اللہ کی راہ میں   لڑے وہ رحمتِ الٰہی کے امیدوار ہیں   ۔   ( [4] )

حضرت سیِّدُناطِخْفَہ بِن قَیْسرَضَیِ اللہ تَعَالٰی عَنْہ

            حضرت سیِّدُنا طِخْفَہ بن قیس غِفَاری رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کوبھی اہلِ صفہ میں   ذکر کیا گیا ہے ۔ آپ مدینۂ منورہ زَادَھَااللہ شَرَفًاوَّتَعْظِیْمًامیں   مقیم تھے ،   آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کاوصال صفہ میں   ہوا ۔

پیٹ کے بل لیٹنااللہ عَزَّوَجَلَّ کوپسندنہیں :

 ( 1294 ) … حضرت سیِّدُنا اَنس بن  طِخْفَہ بن قَیس غِفَاری رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ اپنے والدسے روایت کرتے ہیں  جو اہلِ صفہ میں   سے تھے کہ رسولِ اکرم صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے صحابۂ



[1]    المعجم الاوسط ،  الحدیث : ۲۷۶۱ ، ج۲ ، ص۱۲۹۔

[2]    المعجم الکبیر ،  الحدیث : ۷۱۰۹ ، ج۷ ، ص۲۷۱ ، ’’مرات‘‘بدلہ ’ ’لبرأت‘‘۔

[3]    المعجم الکبیر ،  الحدیث : ۷۳۰۰ ، ج۸ ، ص۳۴۔

[4]    السیرۃ النبو یۃ لابن ہشام ،  غزوۃ بدرالکبریالخ ، ص۲۹۵۔

                السنن الکبری للبیھقی ،  کتاب السیر ،  باب قسمۃ الغنیمۃ فی دارالحرب ،  الحدیث : ۱۷۹۸۹