Book Name:Allah Walon Ki Batain Jild 1

ہم کعبہ مبارَکہ کی پچھلی جانب آئے تو میں   نے ان سے دریافت کیا :  ’’  کیا آپ تَعَوُّذ نہیں   پڑھتے ؟  ‘‘  انہوں   نے فرمایا :  ’’  میں   دوزخ کی آگ سےاللہ عَزَّوَجَلَّکی پناہ مانگتا ہوں   ۔  ‘‘  پھر آگے چل دیئے ،   حجر اسود کا بوسہ لیا پھر اس کے اوربابِ کعبہ کے درمیان کھڑے ہوکر سینہ اورچہرہ اس پررکھااور کلائیاں   بچھادیں   پھر فرمایا: ’’  میں   نے رسول اللہ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکو اس طرح کرتے ہوئے دیکھا ہے  ۔  ‘‘    ( [1] )

3 برائیاں   اور3بھلائیاں :

 ( 980 ) … حضرت سیِّدُناحسین بن شُفَیرَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں : ہم حضرت سیِّدُناعبداللہبن عمروبن عاص رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُمَا کی خدمت میں   حاضرتھے کہ وہاں   ایک بچھڑاآیا ۔  آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا:  ’’  جو شخص اس پر سوار ہو کر تمہاری طرف آیا ہے میں   اسے جانتا ہوں   ۔  ‘‘ جب وہ سوار آکر بیٹھ گیا توآپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے اس سے فرمایا :  ’’ ہمیں   3 بھلائیوں   اور 3 برائیوں   کے بارے میں   بتاؤ ۔  ‘‘ اس نے کہا :  ’’ ہاں   ! 3 بھلائیاں   یہ ہیں :  سچی زبان،  پرہیزگاردل اور نیک بیوی اور 3 برائیاں   یہ ہیں :  جھوٹی زبان ،  نافرمان دل اور بُری بیوی ۔  ‘‘ پھر آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :  ’’ بے شک میں   یہ چیزیں   تمہیں   بیان کر چکا ہوں    ۔  ‘‘    ( [2] )

 ( 981 ) … حضرت سیِّدُناابو عبدالرحمن حُبُلِی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہ الْقَوِی نے حضرت سیِّدُناعبداللہبن عمرو بن عاص رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُمَاکو فرماتے سناکہ ’’  مجھے قیامت کے دن 10 مسکینوں   میں   سے دسواں   ہونا 10 مالداروں   میں   سے دسواں   ہونے سے زیادہ محبوب ہے کیونکہ اس دن زیادہ مال دار کم تو شہ والے ہوں   گے سوائے اس شخص کے جو دائیں   بائیں    ( یعنی بکثرت )  صدقہ کرے ۔  ‘‘    ( [3] )

بدکلام پرجنت حرام ہے :  

 ( 982 ) … حضرت سیِّدُناابو عبدالرحمن حُبُلِی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہ الْقَوِی نے حضرت سیِّدُنا عبداللہبن عمرو بن عاص رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُمَاکو فرماتے سناکہ ’’   ہربدزبان پر جنت میں   داخلہ حرام ہے ۔  ‘‘    ( [4] )

مسلمان کوپانی پلانے کی فضیلت :  

 ( 983 ) … حضرت سیِّدُناحُمَیْدبن ہِلَال رَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہسے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُنا عبداللہبن عمرو بن عاص رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُمَا نے فرمایا :  ’’ جو کسی مسلمان کو ایک گھونٹ پانی پلاتا ہے اللہ عَزَّوَجَلَّاسے جہنم سے اتنی مسافت دور فرما دیتاہے جتنی مسافت طے کرتے کرتے گھوڑاتھک جاتاہے  ۔  ‘‘    ( [5] )

 ( 984 ) … حضرت سیِّدُناحمیدبن ہِلَال رَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُناعبداللہ بن عمرو بن عاص رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُمَا نے فرمایا :  ’’ بے مقصدکام کوترک کردو،  فضول باتوں   سے بچو اوراپنی زبان کی اس طرح حفاظت کرو جس طرح سونے چاندی کی حفاظت کرتے ہو ۔  ‘‘    ( [6] )

 اللہ عَزَّوَجَلَّکے ناپسندبندے :  

 ( 985 ) … حضرت سیِّدُناابن ہُبَیْرَہ رَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُناعبداللہبن عمرو بن عاص رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہُمَا نے فرمایا :  ’’  حضرت سیِّدُناموسیٰکلیم اللہ عَلٰی نَبِیِّنَاوَعَلَیْہِ الصَّلٰوۃُوَالسَّلَام پر نازل ہونے والے صحیفے میں   ہے کہاللہ عَزَّوَجَلَّ اپنی مخلوق میں  3 بندوں   کو پسند نہیں   فرماتا :  ایک وہ جو دو دوستوں   کے درمیان پھوٹ  ( یعنی جدائی )  ڈالتاہے ۔  دوسرا وہ جو تعویذات لے کر چلتا ہے  ( [7] )اور تیسرا وہ جو کسی بے عیب کوعیب لگانے اورعَار دلانے کی جستجومیں   رہتا ہے ۔  ‘‘    ( [8] )

 



[1]    سنن ابی داؤد ،  کتاب المناسک ،  باب الملتزم ،  الحدیث : ۱۸۹۹ ، ص۱۳۶۳۔

[2]    تاریخ دمشق لابن عساکر ،  الرقم۹۸۸تبیع بن عامر ،  ج۱۱ ، ص۳۲۔

[3]    تاریخ دمشق لابن عساکر ،  الرقم۳۴۳۴عبداﷲ بن عمروبن العاص ، ج۳۱ ، ص۲۶۶

[4]    موسوعۃلابن ابی الدنیا ،  کتاب الصمت وآداب اللسان ،  باب ذم الفُحْش والبذاء ،  الحدیث : ۳۲۵ ، ج۷ ، ص۲۰۴۔

[5]    المعجم الکبیر ،  الحدیث : ۱۳۵ ، ج۱۳۔۱۴ ، ص۳۹ ، مفہومًا۔

[6]    موسوعۃ لابن ابی الدنیا ،  کتاب الصمت وآداب اللسان ،  باب حفظ اللسان وفضل الصمت ،  الحدیث : ۲۴ ، ج۷ ،  ص۴۴۔

[7]

Total Pages: 273

Go To