Book Name:Allah Walon Ki Batain Jild 1

نہیں   جانتااس لئے مجھے غرق ہونے کا خوف لاحق رہتا ہے ۔  ‘‘    ( [1] )

 ( 721 ) … حضرت سیِّدُنا حسن رَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :  ’’  اے لوگو !  مجھے تمہارے بارے میں   سب سے زیادہ خوف عالِم کی لغزش اوراس بات کاہے کہ منافق قرآن سے مجادلہ ( جھگڑا )  کرے حالانکہ قرآنِ پاکاللہ عَزَّوَجَلَّ کی سچی کتاب ہے  ۔ جس طرح راستے کے سرے پر رہنما منارہ ہوتا ہے اسی طرح قرآن بھی ایک منارہ ہے اور جو شخص دنیا سے بے نیاز نہ ہو اس کے لئے دنیا بے فائدہ ہے ۔  ‘‘    ( [2] )

سیِّدُناابودرداء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کی دُعا :  

 ( 722 ) … حضرت سیِّدُنا بلال بن سعد عَلَیْہ ِ رَحْمَۃُ اللہ الْاَحَدفرماتے ہیں : میں   نے حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کو یہ دُعا مانگتے سنا :  ’’ اَللّٰھُمَّ اِنِّیْ اَعُوْذُ بِکَ مِنْ تَفْرِقَۃِ الْقَلْبیعنی :  اےاللہ عَزَّوَجَلَّ ! میں   دل کے متفرق ہونے سے تیری پناہ ما نگتا ہوں   ۔  ‘‘ آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ سے عرض کی گئی :  ’’  دل کے متفرق ہونے کا کیا مطلب ہے ؟  ‘‘ فرمایا :   ’’ میرے لئے مختلف وادیوں   میں   مال رکھ دیا جائے ۔  ‘‘    ( [3] )

ہنستاہواجنت میں   جائے گا :  

 ( 723 ) … حضرت سیِّدُناعبدالرحمن بنجُبَیْررَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ اپنے والدسے روایت کرتے ہیں   کہ حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایاکہ ’’ بے شک ان لوگوں   میں   سے کہ جن کی زبانیں   ہروقتاللہ عَزَّوَجَلَّ کے ذکر میں   مشغول رہتی ہیں   ہرشخص مسکراتاہواجنت میں   داخل ہوگا ۔  ‘‘    ( [4] )   

ذکراللہ ،   صدقہ کرنے سے افضل ہے :  

 ( 724 ) … حضرت سیِّدُنا سالم بن ابوالجَعْدرَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے کہ کسی نے حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ کی خدمت میں   عرض کی کہ ’’  حضرت سیِّدُناسَعْدبن مُنَبِّہرَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ نے 100 غلام آزاد کئے ہیں   ۔  ‘‘  آپ رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :   ’’ ایک آدمی کے مال سے 100 غلام کا آزاد ہونا بہت بڑی بات ہے لیکن تم چاہو تومیں   تمہیں   اس سے بھی افضل چیزبتاؤں   ؟ وہ یہ کہ رات دن ہر وقت ایمان کو لازِم پکڑو اوراپنی زبان ہروقت ذکرالٰہی سے تررکھو ۔  ‘‘    ( [5] )

 ( 725 ) … حضرت سیِّدُناعِمْرَان قَصِیْرعَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہ الْقَدِیْرفرماتے ہیں : میں   نے اَبورَجَائعَلَیْہِ رَحْمَۃُ رَبِّ الْعُلَائکو فرماتے ہوئے سناکہ حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :  ’’ 100مرتبہ ’’  اللہ اَکْبَر ‘‘ کہنا مجھے 100دینار صدقہ کرنے سے زیادہ محبوب ہے ۔  ‘‘    ( [6] )   

سب سے اچھاعمل :  

 ( 726 ) … حضرت سیِّدُناکَثِیربن مُرَّہ حَضْرَمِیعَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہ الْقَوِی  سے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :  ’’ کیا تمہارے اعمال میں   سے سب سے اچھے عمل کے بارے میں   نہ بتاؤں  جو تمہارے مالک عَزَّوَجَلَّکے نزدیک پسندیدہ اوردَرَجات میں   اضافے کاباعث اوردُشمن سے جنگ کرنے،  اپنی گردن کٹوانے ،   اس کی گردن کا ٹنے اور راہِ خدا میں   درہم و دینار خرچ کرنے سے بہتر ہو ؟  ‘‘ لوگوں   نے عرض کی :  ’’ اے ابو دردا ء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ !  وہ کون سا عمل ہے  ؟  ‘‘  فرمایا :   ’’ اللہ عَزَّوَجَلَّ کا ذکر کرنا اوراس کا ذکر ہی سب سے بڑا ہے ۔  ‘‘    ( [7] )

مومن اورکافرکی زبان :  

 ( 727 ) … حضرت سیِّدُنااُسَیْدبن وَدَاعَہ رَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُناابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :  ’’  مومن کے جسم میں   کوئی عضو ایسا نہیں   جواللہ عَزَّوَجَلَّ کو زبان سے زیادہ محبوب ہو اور مومن اسی کے سبب جنت میں   داخل ہوگااور کافر کے جسم میں   بھی کوئی عضو ایسا نہیں   جواللہ عَزَّوَجَلَّ کو زبان سے زیادہ ناپسندید ہو اور کافراسی کے سبب جہنم میں   جائے گا ۔  ‘‘    ( [8] )

 ( 728 ) … حضرت سیِّدُنا عبدالملک بنعُمَیْررَحْمَۃُ اللہ تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے کہ حضرت سیِّدُنا ابو دَرْدَاء رَضِیَ اللہ تَعَالٰی عَنْہ نے فرمایا :  ’’  جو موت کوکثرت سے یادکرتا ہے اس کی خوشیاں   کم ہوجاتیں   اور جسم کمزور پڑ جاتا ہے ۔  ‘‘    ( [9] )

 



[1]    رجال حول الرسول ،  أبوالدرداء  أیّ حکیم کان ، ص۹۲۔

[2]    الزہدللامام احمدبن حنبل ،  باب زہدابی الدرداء ،  الحدیث : ۷۷۲ ، ص۱۶۶۔

[3]    الزہدلابن المبارک ،  باب فی طلب الحلال ،  الحدیث : ۶۳۵ ، ص۲۲۳۔

[4]    الزہدللامام احمدبن حنبل ،  باب زہدابی الدرداء ،  الحدیث : ۷۲۶ ، ص۱۶۱۔

[5]    الزہدللامام احمدبن حنبل ،  باب زہدابی الدرداء ،  الحدیث : ۷۳۰ ، ص۱۶۱