Book Name:Allah Walon Ki Batain Jild 1

( 16 )شرعی تفتیش :  

             ’’  شعبہ تراجم کتب  ‘‘ جب اپنے حصے کاکام مکمل کرلیتاہے توپھر ’’   ترجمہ  ‘‘ کو ’’  مجلسِ تفتیش کتب ورسائل  ‘‘ سے متعلقہ دارالافتا کے مدنی علمائے کرامکَثَّرَہُمُ اللہ السَّلَامکے سِپُردکردیتاہے اوروہ اس ترجمہ کوعقائد،  کفریہ عبارات،   اخلاقیات،   فقہی مسائل،  اورعربی عبارات وغیرہ کے حوالے سے مقدوربھرملاحظہ فرماتے ہیں   ۔ آپ کے ہاتھوں   میں   موجود ’’ حلیۃ الاولیاء  ‘‘  کاترجمہ بنام ’’  اللہوالوں   کی باتیں   ‘‘  ( جلداول ) بھی اس مرحلہ سے ہوکرآپ تک پہنچا ہے ۔

میٹھے میٹھے اسلامی بھائی :  

            اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْن ! آج اس کتاب کی پہلی جلد زیورِترجمہ سے آراستہ ہوکرآپ کے ہاتھوں   میں   ہے اورمزیدکام جاری ہے  ۔  اس ترجمہ میں   جو بھی خوبیاں   ہیں   وہ یقینا ً اللہ عَزَّوَجَلَّ  اور اس کے پیارے حبیب صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی عطاؤں  ،   اَولیائے کرام رَحِمَہُمُ اللہ السَّلَام کی عنایتوں   اور شیخ طریقت،  اَمیر اہلسنّت،   بانی ٔ دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطارؔ قادری رضوی ضیائی دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ کی پرخلوص دعاؤں   کا نتیجہ ہے اور جو خامیاں   ہیں   ان میں   ہماری کوتاہ فہمی کادخل ہے ۔

            علمِ دین اورتقویٰ کے حصول اور اللہ و رسول عَزَّوَجَلَّ وَصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی اِطاعت و فرمانبرداری پر اِستقامت پانے اور ’’  اپنی اورساری دُنیا کے لوگوں  کی اِصلاح کی کوشش  ‘‘ کا مقدس جذبہ اُجاگرکرنے کے لئے خودبھی اس کتاب کامطالعہ کیجئے اورحسبِ اِستطاعت ’’ دعوتِ اسلامی  ‘‘ کے اِشاعتی ادارے ’’ مکتبہ المدینہ ‘‘ سے ہدیۃً حاصل کرکے دوسرے اسلامی بھائیوں   بالخصوص مفتیانِ کرام اورعلمائے اہلسنّت دَامَتْ فُیُوْضُھُمْ کی خدمت میں   بطورِتحفہ پیش کیجئے ۔

اللہکرم ایساکرے تجھ پہ جہاں  میں 

اے دعوتِ اسلامی ! تیری دھوم مچھی ہو

 ( اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْنصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم )   

شعبہ تراجم کتب  ( مجلس المدینۃ العلمیۃ )    

٭٭٭٭٭٭

 

غیبت کے خلاف جنگ

ہم نہ غیبت کریں   گے نہ سنیں   گے

ان شاء اللہعَزَّوَجَلَّ

خطبۃالکتاب

                 اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ مُحْدِثِ الْاَکْوَانِ وَالْاَعْیَان٭وَ مُبْدِعِ الْاَرْکَانِ وَ الْاَزْمَان٭وَ مُنْشِیئِ الْاَلْبَابِ  وَالْاَبْدَان ٭مُنْتَخِبِ الْاَحْبَابِ وَ الْخُلَّان٭مُنَوِّرِ اَسْرَارِالْاَبْرَارِ بِمَااَوْدَعَھَامِنَ الْبَرَاھِیْنِ وَالْعِرْفَان٭وَمُکَدِّرِجَنَانِ الْاَشْرَارِ بِمَا حَرَمَھُمْ مِنَ الْبَصِیْرَۃِ وَالِْایْقَان٭اَلْمُعَبِّرِعَنْ مَعْرِفَتِہِ الْمَنْطِقِ وَاللِّسَان٭وَالْمُتَرْجِمِ عَنْ بَرَاھِیْنِہِ الْاَکُفِّ وَالْبَنَان*بِا لْمُوَافِقِ لِلتَّنْزِیْلِ وَ الْفُرْقَان٭وَالْمُطَابِقِ لِلدَّلِیْلِ وَاللِّسَان٭فَاَلْزَمَھُمُ الْحُجَّۃَ بِالْقَادَۃِ  مِنَ الْمُرْسَلِیْن٭وَاَبْھَجَ الْمِنْھَجَ بِالسَّادَۃِ مِنَ الْمُحَقِّقِیْن٭اَلَّذِیْنَ جَعَلَھُمْ خُلَفَاءَ الْاَنْبِیَاء٭وَعُرَفَاءَ الْاَصْفِیَاء الْمُقَرَّبِیْنَ اِلَی الرُّتَبِ الرَّفِیْعَۃ*وَالْمُنَزَّھِیْنَ عَنِ النَّسَبِ الْوَضِیْعَۃ٭وَالْمُؤَیَّدِیْنَبِالْمَعْرِفَۃِ وَ التَّحْقِیْق٭وَالْمُقَوَّمِیْنَ بِاالْمُتَابَعَۃِ وَالتَّصْدِیْق٭مَعْرِفَۃً تَعْقُبُ لِمَعْرِفَتِھِمْ مُوَافَقَۃ*وَتُوْجِبُ لِحُکْمِ نُفُوْسِھِمْ مُفَارَقَۃ٭وَتَلْزَمُ لِخِدْمَۃٍ مَشْھُوْرَۃٍ مُعَانَقَۃ٭وَتَحَقَّقَ لِشَرِیْعَۃِ رَسُوْلِھِمْ مُرَافَقَۃ٭وَالصَّلٰوۃُ عَلٰی مَنْ عَنْہُ بَلَّغَ وَ شَرَعَ٭وَ بِاَمْرِہٖ قَامَ وَ صَدَعَ٭وَ لِمُتَّبِعِیْہِ غَرَسَ وَزَرَعَ٭ مُحَمَّدِ الْمُصْطَفَی الْمُصْطَنَع٭وَعَلٰی اِخْوَانِہٖ مِنَ النَّبِیِّیْنَ وَالْمُرْسَلِیْن٭وَعَلٰی اٰلِہٖ وَ صَحَابَتِہٖ الْمُنْتَخَبِیْنَ وَسَلَّم٭

          ترجمہ :  تمام تعریفیں  اللہ عَزَّوَجَلَّ کے لئے ہیں   جس نے تمام موجودات اور تمام اشیاء کو تخلیق فرمایا ۔ ہر شے کی حقیقت اور زمانہ و مدت کو ایجاد کیا ۔  جواہر و ابدان پیدا فرمائے ۔ بندوں   میں   سے اپنے دوستوں   اور محبوبوں   کو منتخب فرمایا ۔ نیک بندوں   کے دلوں   میں   پوشیدہ رازوں   کو دلائل و معرفت سے روشن فرمایا ۔ بد کارو ں   کو بصیرت ویقین سے محروم کر کے ان کے دلوں   کوپریشانی میں   مبتلا فرمایا ۔ اپنی معرفت کو کلام سے ظاہر فرمایا ۔ قرآنِ حکیم سے موافقت ،   عربی زبان و لغت سے مطابقت رکھنے والے دلائل کو ہتھیلیوں   اور پوروں   کی طرح واضح فرمایا ۔  مرسلین عَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُوَالسَّلَام کو مبعوث فرما کر اپنی حجت کو تمام فرمایا ۔  ائمہ محققین کو لوگوں   کا راہنما بنا کر راہِ حق کو خوشنما بنایا ۔ انہیں   انبیائے کرامعَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامکا خلیفہ ونائب اوراپنے مخلصین کا جانشین کیا ۔ گھٹیا نسب سے پاک صاف رکھا،  بلند مراتب پرفائز اپنے مقربین میں   شامل فرمایا ۔  تحقیق و معرفت سے ان کی تا ئید فرمائی ۔ اطاعت و فرمانبرداری سے انہیں   راہِ راست پر گامزن فرمایا ۔  انہیں   معرفت در معرفت عطافرمائی ۔ جس نے ہر جان کے لئے مُفَارَقَت ( یعنی موت  ) کافیصلہ فرمایا ۔  دین اسلام کی  خدمت کے لئے بغل گیر ہونے کو لازم ٹھہرایا ۔ رسولعَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَ السَّلَامکی شریعت کا ساتھ دینے کاپابندبنایا ۔

            اور دُرُو د و سلام ہو حضرت سیِّدُنامحمدمصطفی،  احمدمجتبیٰ صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمپر جنہوں   نےاللہ عَزَّوَجَلَّ کی طرف سے دین وشریعت کی تبلیغ فرمائی اورحکمِ الٰہی سے حق کا اعلان فرمایا ۔ اپنے اطاعت گزار اُمتیوں   کے لئے خیر و برکت کے درخت لگائے اور دیگر انبیائے کرام و مرسلین عُظَّامعَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُوَالسَّلَام،   آپصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی آل اور جان نثار صحابۂ کرام



Total Pages: 273

Go To