Book Name:Huquq Ul Ibad Kaisay Maaf Hon

حقوق العباد اور ان کی معافی سے متعلق نفیس وعمدہ تحقیق پر مشتمل ایک اہم رسالہ

أَعْجَبُ الإِمْدَادِ فِيْ مُکَفِّرَاتِ حُقُوْقِ الْعِبَادِ

تصنیف :  اعلٰی حضرت، امام اہلسنت، مجدّدِ دین وملّت

مولانا شاہ امام احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن

 

 

کی تسہیل وتخریج بنام

 

 

حقوق العباد کیسے معاف ہوں

 

 

 

 

پیشکش

مجلس :   المدینۃ العلمیۃ (دعوت ِاسلامی)

شعبۂ کتب ِاعلیٰ حضرت رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ

 

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

’’حقوق العباد کیسے معاف ہوں  ‘‘  کے اکیس حُروف

کی نسبت سے اس کتاب کو پڑھنے کی ’’21 نیّتیں  ‘‘

         فرمانِ مصطفی صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  : نِیَّۃُ الْمُؤْمِنِ خَیْرٌ مِّنْ عَمَلِہٖ مسلمان کی نیّت اس کے عمل سے بہتر ہے ۔ (المعجم الکبیر للطبرانی، الحدیث : ۵۹۴۲، ج۶، ص۱۸۵، داراحیاء التراث العربی بیروت)

 دو مَدَنی پھول :

 {1}  بِغیر اچّھی نیّت کے کسی بھی عملِ خیر کا ثواب نہیں  ملتا ۔  

{2}جتنی اچّھی نیّتیں  زِیادہ، اُتنا ثواب بھی زِیادہ ۔  

              {1}ہربارحَمْدو{2}صلوٰۃ اور{3}تعوُّذو{4}تَسمِیہ سے آغاز کروں  گا(اسی صفحہ پر اُوپر دی ہوئی دو عَرَبی عبارات پڑھ لینے سے چاروں  نیّتوں  پر عمل ہوجائے گا ۔ ) {5}رِضائے الٰہی عَزَّوَجَلَّ کیلئے اس کتاب کا اوّل تا آخِر مطالَعہ کروں  گا {6} حتَّی الْوُسْعْ اِس کا باوُضُو اور {7}قِبلہ رُو مُطالَعَہ کروں  گا{8} قرآنی آیات اور {9}اَحادیثِ مبارَکہ کی زِیارت کروں  گا{10}جہاں  جہاں  ’’اللہ‘‘ کا نام پاک آئے گا وہاں  عَزَّوَجَلَّ  اور{11} جہاں  جہاں  ’’سرکار‘‘کا اِسْمِ مبارَک آئے گا وہاں  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  پڑھوں گا {12})اپنے ذاتی نسخے پر(  ’’یادداشت‘‘ والے صفحہ پر ضَروری نِکات لکھوں  گا {13})اپنے ذاتی نسخے پر( عِندَا لضَّرورت خاص خاص مقامات پر انڈر لائن کروں  گا {14} کتاب مکمل پڑھنے کے لیے بہ نیت ِحصولِ علم ِدین روزانہ چند صفحات پڑھ کر علم ِدین حاصل کرنے کے ثواب کا حقدار بنوں  گا{15}دوسروں  کویہ کتابپڑھنے کی ترغیب دلاؤں  گا {16} اسحدیثِ پاک ’’ تَھَادَوْا تَحَابُّوْا ‘‘ ایک دوسرے کو تحفہ دو آپس میں  محبت بڑھے گی‘‘)موطأ إمام مالک، ج۲، ص۴۰۷، رقم :  ۱۷۳۱، دارالمعرفۃ بیروت( پرعمل کی نیت سے )ایک یا حسبِ توفیق تعداد میں ( یہ کتابیں  خرید کر دوسروں  کو تحفۃً دوں  گا{17}جن کو دوں  گا حتّی الامکان انہیں  یہ ہدف بھی دوں  گا کہ آپ اتنے (مثلاً 5)دن کے اندر اندر مکمل پڑھ لیجیے {18}اس



Total Pages: 19

Go To