Book Name:101 Madani Phool

کسی کو چھینک آئی اور آپ نے جواب کی نیّت سے  اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ کہہ لیا تو آپ کی نماز ٹوٹ جائے گی ۔  (عالَمگیری     ج   ۱ ص۹۸)  {17}کافِر کو چھینک آئی اور اس نے اَلْحَمْدُلِلّٰہ کہاتو جواب میں یَھْدِ یْکَ اللہ  ( یعنی اللہ عَزَّ وَجَلَّ   تجھے ہدایت کرے ) کہاجائے ۔  (رَدُّالْمُحتارج۹ص۶۸۴)طرح طرح کی ہزاروں سنّتیں سیکھنے کیلئے مکتبۃُ المدینہ کی مطبوعہ دو کُتُب’’ بہارِ شریعت ‘‘  حصّہ16 (312صَفَحات ) نیز 120صَفَحات کی کتاب’’ سنّتیں اور آداب‘‘ ھدِیّۃً حاصِل کیجئے اور پڑھئے ۔  سنّتوں کی تربیّت کا ایک بہترین ذَرِیعہ دعوتِ اسلامی کے مَدَنی قافِلوں میں عاشِقانِ رسول کے ساتھ سنّتوں بھرا سفر بھی ہے ۔

صَلُّوا  عَلَی الْحَبِیب !                 صلَّی اللہ تعالٰی علٰی محمَّد

    میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! بیان کو اِختِتام کی طرف لاتے ہوئے سنّت کی فضیلت اور چندسُنّتیں اور آداب بیان کرنے کی سعادت حاصِل کرتا ہوں ۔ تاجدارِ رسالت ، شَہَنْشاہِ نُبُوَّت ، مصطَفٰے جانِ رحمت، شمعِ بزمِ ہدایت ، نَوشَۂ بزمِ جنّت صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَکا فرمانِ جنّت نشان ہے :  جس نے میری سنّت سے  مَحَبَّت کی اُس نے مجھ سے مَحَبَّت کی اور جس نے مجھ سیمَحَبَّت کی وہ  جنّت  میں میرے ساتھ ہو گا ۔  (مِشْکاۃُ الْمَصابِیح ، ج۱ ص۵۵ حدیث ۱۷۵ دارالکتب العلمیۃ بیروت  )

سُنّتیں عام کریں دین کا ہم کام کریں

نیک ہو جائیں مسلمان مدینے والے

صَلُّوا  عَلَی الْحَبِیب !                 صلَّی اللہ تعالٰی علٰی محمَّد

’’یانبیَّ ا للّٰہ‘‘ کے نو حُرُوف کی نسبت

سے ناخُن کاٹنے کے 9 مَدَنی پھول

{1}جُمُعہ کے دن ناخن کاٹنامُستَحَبہے ۔  ہاں اگر زیادہ بڑھ گئے ہوں تو جُمُعہ کا اِنتظار نہ کیجئے  (دُرِّمُختارج۹ص۶۶۸)صدرُ الشَّریعہ، بدرُ الطَّریقہ مولیٰنا امجد علی اعظمی علیہ رحمۃ القوی   فرماتے ہیں  : منقول ہے : جو جُمُعہکے روز ناخُن تَرَشوائے (کاٹے )اللہ تَعَالٰی اُس کو دوسرے جُمعے تک بلاؤں سے محفوظ رکھے گا اور تین دن زائد یعنی دس دن تک ۔  ایک روایت میں یہ بھی ہے کہ جو جُمُعہ کے دن ناخُن تَرَشوائے (کاٹے ) تو رَحمت آئیگی اور گُناہ جائیں گے (دُرِّمُختار، رَدُّالْمُحتَارج۹ص۶۶۸، بہارِشریعت حصّہ۱۶ ص ۲۲۵، ۲۲۶){2} ہاتھوں کے ناخُن کاٹنے کے منقول طریقے کاخُلاصہ پیشِ خدمت ہے :  پہلے سیدھے ہاتھ کی شہادت کی انگلی سے شُرو ع کر کے ترتیب وار چھنگلیا (یعنی چھوٹی انگلی ) سَمیت ناخن کاٹے جائیں مگر انگوٹھا چھوڑدیجئے  ۔ اب اُلٹے ہاتھ کی چھنگلیا (یعنی چھوٹی انگلی ) سے شروع کرکے تر تیب وار انگوٹھے سَمیت ناخن کاٹ لیجئے ۔ اب آخِرمیں سیدھے ہاتھ کے انگوٹھے کا ناخن کاٹا جائے ۔ (دُرِّمُختارج۹ص۶۷۰، اِحْیائُ الْعُلُوم  ج ۱



Total Pages: 16

Go To