Book Name:Karbala Ka Khooni Manzar

          بَہَرحال صبْرو شِکَیبائی (شِ ۔ کے ۔ بائی)کا دامن تھامے،   حُسنِ اَخلاق کا پیکر بنی رہیں اور اپنی مختصَر ترین زندگی کو شریعت وسنّت کے مطابِق گزاریں اور تبلیغِ قرآن و سنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تَحریک’’دعوتِ اسلامی‘‘ کے مَدَنی ماحول سے ہر دَم وابَستہ رہیں اور اسلامی بہنوں کو نیکی کی دعوت دیتی رہیں  ۔

مَوت اٹل ہے

          یاد رہے !  مَوت اَٹل ہے،   عنقریب ہمارے ناز اٹھانے والے ہمیں اپنے کندھوں پر لاد کر ویران قبرِستان میں اندھیری قبر کے اندر مَنوں مِٹّی تلے دَفْن کرکے تنہا چھوڑ کر چلے جائیں گے ۔  اگر خُدانخواستہ غیر شرعی فیشن بھری زندگی ہوئی،   بے پردگی کاسلسلہ رہا،   نَمازوں اور روزوں میں غَفلت ہوئی،   اور اگر اللہ عَزَّوَجَلَّ اور اُس کے مَحبوب صلی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلم  ناراض ہوگئے اور عذاب کی صورت ہوئی تو پھر اندھیری قَبْر میں اور وہ بھی سانپ بچّھوؤں کے ساتھ،   قِیامت تک کیسے گزارہ ہوگا؟ لہٰذا ہر دَم موت پیشِ نظر رہے اور جلد ترختم ہوجانے والی مختصَر ترین زندگی میں طویل ترین آخِرت کی تیّاری کر لیجئے  ۔

مِرا دل کانپ اُٹھتا ہے کلیجہ منُہ کو آتا ہے

کرم یارب !  اندھیرا قبر کا جب یاد آتا ہے

مَدَنی ماحول کی بَرَکت

          مِری مَدَنی بیٹی !  تبلیغِ قرآن و سنّت کی عالمگیرغیر سیاسی تحریک ،   ’’دعوتِ اسلامی‘‘ کا کام کرنے میں جہاں کثیر ثواب ہے وہاں یہ بھی فائدہ ہے کہ مَدَنی ماحول نصیب ہوتا ہے اور خود اپنی بھی اچّھے عمل کرنے کی عادت پڑجاتی ہے،   عشقِ مدینہ و تاجدارِ مدینہ صلی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلم نصیب ہوتا ہے اور نیکی کی دعوت دینے کے فضائل کا تو اس بات سے اندازہ لگائیں کہ

نیکی کی دعوت کا ثواب

          ایک بار حضرتِ سیِّدُنا مُوسیٰ کلیمُ اللہ علٰی نَبِیِّنا وَعَلیہِ الصّلوٰۃ وَالسّلام نے بارگاہِ خُداوندی عَزَّوَجَلَّمیں عرض کی :  یا اللہ عَزَّوَجَلَّجو اپنے بھائی کو نیکی کا حکم کرے اور بُرائی سے روکے اس کی جَزا کیا ہے؟ اللہ تبارَکَ وَتَعالٰینے ارشاد فرمایا :  میں اُس کے ہر ہرکلمہ کے بدلے ایک ایک سال کی عبادت کا ثواب لکھتا ہوں اور اُسے جہنَّم کی سزا دینے میں مجھے حَیا آتی ہے ۔

 (مُکَاشَفَۃُ الْقُلُوْب ص۴۸ دارالکتب العلمیۃ بیروت)

نیکیوں کا انبار        

        سُبْحٰنَ اللہ عَزَّوَجَلَّ  !  اگر ہم کسی کو بھلائی کی ایک بات بتائیں گے تو ہمیں ایک سال کی عبادت کا ثواب ملے گا تو غور فرمائیے کہ جب آپ کسی ایک اسلامی بہن کو بھی ’’فَیضانِ سنّت‘‘ سے دَرس دیں گی اور فرض کریں آپ نے دو صَفَحات پڑھ کر سنائے اور ان میں اگر بیس باتیں نیکی و بھلائی کی بیان ہوئیں تو درس سننے والی وہ اسلامی بہن ان پر عمل کرے یا نہ کرے آپ کے نامۂ اعمال میں اِن شاءَ اللہ عَزَّوَجَلَّ بیس سال کی عبادت کا ثواب لکھا جائیگا اور اگر آپ سے سُن کراس اسلامی بہن نے عمل کرنا شروع کردیاتو وہ جب



Total Pages: 14

Go To