Book Name:Islami Behno Ki Namaz

عَسٰۤى اَنْ تُحِبُّوْا شَیْــٴًـا وَّ هُوَ شَرٌّ لَّكُمْؕ-  ( پ۲ البقرۃ ۲۱۶)

ترجَمۂ کنزالایمان: قریب ہے کہ کوئی بات تمہیں   پسند آئے اور وہ تمہارے حق میں   بُری ہو۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                       صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 {18}  اِسی ماحول نے ادنٰی کو اعلٰی کردیا دیکھو!

            بابُ المدینہ  (کراچی ) کی ایک اسلامی بہن کے بیان کالُبِّ لُباب ہے کہ والِدَین کے بے حد اِصرار پر میں  نے قراٰنِ پاک حفِظ کرنے کی سعادت تو حاصل کر لی تھی مگر بعد میں   اِس کو دُہرانا چھوڑدیا تھا جس کی وجہ سے والِدَین کو سخت تشویش تھی ۔اتنی عظیم سعادت حاصل کرلینے کے باوُجُود افسوس!میری عملی کیفیت یہ تھی کہ میں  نَمازوں  کی پابندی سے غافل تھی ۔نت نئے فیشن اپنانے اورفلمی گانے سننے کی تواتنی شوقین تھی کہ ہیڈ فون لگا کر بعض اوقات توساری ساری رات گانے سننے میں   برباد کر دیتی!T.V.کی تباہ کاریوں   نے مجھے بَہُت بری طرح اپنی لپیٹ میں   لیا ہوا تھا ،  چُنانچِہ میں   فلمیں   ڈرامے دیکھنے کی خوب ہی رَسیا تھی، بِالخصوص ایک گُلوکار کے گانوں   کی تو اِسقدر دیوانی تھی کہ میری سَہَیلیاں   مذاقاًکہا کرتی تھیں   کہ یہ تومرتے وقت بھی اسی گُلوکار کو یاد کرتے ہوئے دم توڑے گی!صدکروڑ افسوس کہ اگر میں   اُس گُلوکار کا کوئی شَو  (پروگرام) نہ دیکھ پاتی تو رو رو کربُرا حال کر لیتی یہاں   تک کہ کھانابھی چھوٹ جاتا!اَلغرض میرے صبح وشام یونہی گناہوں   میں   بسر ہو رہے تھے۔میری مُمانی دعوتِ اسلامی کے اسلامی بہنوں   کے سنّتوں   بھرے اجتماعات میں  شرکت کیا کرتی تھیں  ۔وہ مجھے بھی اجتماع میں   شرکت کی دعوت دیتیں   مگر میں   ٹال دیتی ۔ ان کی مسلسل انفِرادی کوشش کے نتیجے میں   بالآخِر مجھے دعوتِ اسلامی کے ہفتہ وار سنّتوں   بھرے اجتماع میں  شرکت کی سعادت حاصل ہو ہی گئی،اجتِماع میں   ہونے والے سنّتوں   بھرے بیان، ذِکرُاللّٰہ عَزَّوَجَلَّ اور رِقّت انگیز دُعا نے مجھ پر بَہُت گہرا اثر ڈالا ۔ ایک حلقہ ذِمّہ دار اسلامی بہن مجھ پر بڑی شَفقَت فرماتیں   اور مجھے گھر سے بُلا کر سنّتوں   بھرے اجتماع میں  شرکت کرواتیں   ۔ ان کی مسلسل شَفقَتوں   کے سبب میری اِصلاح کا سامان ہونے لگا حتّٰی کہ فلمیں   ڈِرامے دیکھنے، گانے باجے سننے اور دیگر گناہوں   سے میں   نے توبہ کر لی ۔مکتبۃُ المدینہ کے جاری کردہ سنّتوں   بھرے بیانات کی کیسٹیں   سنتی تو خوفِ خدا سے لرز کر رہ جاتی کہ اگر یونہی گناہ کرتے کرتے مجھے موت آگئی تو میرا کیا بنے گا !اسی طرح مکتبۃ المدینہ سے شائع ہونے والیکُتُب  ورسا ئل پڑھ کر مجھ میں   احساسِ ذمّے داری پیدا ہوا اور میں   بھی اسلامی بہنوں   کے ساتھ مل کر نیکی کی دعوت عام کرنے میں   مصروف ہوگئی ۔ ذِمّہ دار اسلامی بہن مجھے جوبھی ذِمّے داری دیتیں   میں   بَحُسن وخوبی نبھانے کی کوشش کرتی ۔ یوں   دعوتِ اسلامی کا مَدَنی کام کرتے کرتے اَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّ  تادمِ تحریر عَلاقائی مشاورت کی خادِمہ  (ذمّہ دار) کی حیثیت سے دعوتِ اسلامی کے مدنی کام کو بڑھانے میں   کوشاں   ہوں  ۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہعَزَّوَجَلَّ   مفتیٔ دعوت اسلامی حافظ محمد فاروق العطاری المدنی عَلَیْہِ رحمۃ ُاللہِ الغنی کہ جن کے عہدِ طالبِ علمی کا واقِعہ ہے کہ آپ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  قراٰنِ پاک کی کل سات منزلوں   میں   سے روزانہ ایک منزل تلاوت فرمایا کرتے تھے میں   بھی ان کی پَیروی میں   روزانہ ایک منزل کی دہرائی کرکے ہر سات دن میں   ایک بار ختمِ قراٰن کی سعادت حاصِل کر رہی ہوں   ۔ الہٰی استِقامت دے۔اٰمین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ    

استقامت دین پر یا مصطَفٰے کردو عطا

بہرِ خبّاب و بِلال و آلِ یا سِر یا نبی

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                        صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

            دعوتِ اسلامی کا مَدَنی ماحول کتنا پیارا پیارا ہے ۔ اِس کے دامن میں   آ کرمُعاشَرے کے نہ جانے کتنے ہی بگڑے ہوئے افراد با کردار بن کر سنّتوں   بھری باعزَّت زندگی گزارنے لگے نیز اسلامی بہنوں   کے ہفتہ وار اسنّتوں   بھرے اجتِماعات کی بہاریں   بھی آپ کے سامنے ہیں  ۔ جس طرح اجتِماع میں   شرکت کی بَرَکت سے  بعضوں   کی دُنیوی مصیبت رخصت ہو جاتی ہے ۔اِنْ شَآءَاللہ عَزَّوَجَلَّاِسی طرح تاجدارِ رسالت، شَہنْشاہِ نُبُوَّت ، سراپا رحمت، شفیعِ امّت صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی شَفاعت سے معصیت کی شامت کے سبب آنے والی آخِرت کی آفت بھی راحت میں   ڈھل جائیگی۔   ؎

ٹوٹ جائیں   گے گنہگاروں   کے فوراً قیدو بند

حشر کو کھل جائے گی طاقت رسولُ اللہ کی

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                       صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 {19} میں   پینٹ شرٹ پہنتی تھی 

            بابُ المدینہ  (کراچی ) کی ایک اسلامی بہن کا بیان کچھ یوں   ہے کہ میں   مغرِبی تہذیب کی جُنون کی حد تک دِلدادہ تھی حتّٰی کہ لڑکوں   کی طرح پینٹ شرٹ



Total Pages: 92

Go To