Book Name:Islami Behno Ki Namaz

نکلنے کے بعد وُضو کیا تو جب تک ظُہر کا وقت ختْم نہ ہو وُضو نہ جائے گا کہ ابھی تک کسی فرض نَماز کا وقت نہیں   گیا۔ فرض نَماز کا وقت جاتے ہی معذور کا وُضو جاتا رہتا ہے اور یہ حکم اس صورت میں   ہوگا جب معذور کاعُذر دَورانِ وُضویا بعدِ وُضوظاہِرہو، اگر ایسا نہ ہو اور دوسرا کوئی حَدَث  (یعنی وضو توڑنے والا معاملہ ) بھی لاحِق نہ ہو تو فرض نَماز کا وقت جانے سے وُضو نہیں   ٹوٹے گا۔   ( بہارِ شریعتحصّہ ۲ص۱۰۸،دُرِّمُختار، رَدُّالْمُحتار، ج ۱ ، ص ۵۵۵)

 {3} جب عُذر ثابِت ہو گیا تو جب تک نَماز کے ایک پُورے وقت میں   ایک بار بھی  وہ چیز پائی جائے مَعذورہی رہے گی ۔مَثَلاً کسی کے زَخم سے سارا وَقت خون بہتارہا اور اتنی مُہْلَت ہی نہ ملی کہ وُضُو کر کے فرض ادا کر لے تومَعذور ہو گئی ۔اب دوسرے اَوقات میں   اِتنا موقع مل جاتا ہے کہ وُضو کر کے نَماز پڑھ لے مگر ایک آدھ دَفعَہ زَخم سے خون بہ جاتاہے تو اب بھی مَعذور ہے ۔ ہاں  اگر پورا ایک وَقت ایسا گزر گیا کہ ایک بار بھی خون نہ بہا تو مَعذور نہ رہی پھر جب کبھی پہلی حالت آئی (یعنی سارا وَقت مسلسل مرض ہوا )  تو پھر معذور ہو گئی۔     ( بہارِ شریعتحصّہ ۲ص۱۰۷ )

  {4} معذور کا وُضواگر چِہ اس چیز سے نہیں   جاتا جس کے سبب معذور ہے مگر دوسری کوئی چیز وُضو توڑنے والی پائی گئی تو وُضو جاتا رہا مَثَلاً جس کورِیح خارِج ہونے کا مرض ہے ،زَخم بہنے سے اُس کا وُضو ٹوٹ جائے گا ۔اور جس کوزَخم بہنے کا مرض ہے اُس کا رِیح خارِج ہونے سے وُضو جاتا رہے گا ۔  (اَیضاً ص۱۰۸)

 {5} معذور نے کسی حَدَث  (یعنی وُضو توڑنے والے عمل )  کے بعد وُضو کیا اور وُضو کرتے وَقت وہ چیز نہیں   ہے جس کے سبب مَعذورہے پھر وُضو کے بعد وہ عُذر والی چیز پائی گئی تو وُضو ٹوٹ گیا (یہ حکم اِس صورت میں   ہوگا جب معذور نے اپنے عُذر کے بجائے کسی دوسرے سبب کی وجہ سے وُضوکیا ہو اگر اپنے عُذر کی وجہ سے وُضوکیا تو بعد وُضوعُذر پائے جانے کی صورت میں   وضو نہ ٹوٹے گا۔)  مَثَلاً جس کا زَخم بہتا تھا اس کی رِیح خارِج ہوئی اور اُس نے وُضو کیااور وُضو کرتے وَقت زَخم نہیں  بہااور وُضو کرنے کے بعد بہا تو وُضو ٹوٹ گیا ۔ ہاں  اگر وُضو کے درمیان بہنا جاری تھا تو نہ گیا۔  ( بہارِ شریعتحصّہ ۲ص۱۰۹،دُرِّمُختار، رَدُّالْمُحتار، ج۱،ص۵۵۷)

 {6} معذور کے ایک نتھنے سے خون آرہا تھا وُضو کے بعد دوسرے نتھنے سے آیا وُضو جاتا رہا ،یا ایک زَخم بہ رہا تھا اب دوسرا بہا یہاں   تک کہ چیچک کے ایک دانے سے پانی آرہا تھا اب دوسرے دانے سے آیا وُضو ٹوٹ گیا۔  (اَیضاً۔ اَیضاً ص ۵۵۸)

 {7} معذور کو ایسا عُذر ہو کہ جس کے سبب کپڑے ناپاک ہو جاتے ہیں   تو اگر ایک دِرہَم سے زیادہ ناپاک ہو گئے اور جانتی ہے کہ اتنا موقع ہے کہ اسے دھو کر پاک کپڑوں   سے نَماز پڑھ لوں   گی تو پاک کر کے نَماز پڑھنا فَرض ہے اور اگر جانتی ہے کہ نَماز پڑھتے پڑھتے پھر اتنا ہی ناپاک ہو جائے گا تو اب دھونا ضَروری نہیں   ۔ اِسی سے پڑھے اگرچِہ مُصلّٰی بھی آلُودہ ہو جائے تب بھی اس کی نَماز ہو جائے گی۔  ( بہارِ شریعتحصّہ ۲ ص ۱۰۹ )

 {8} اگر کپڑاوغیرہ رکھ کر (یا سُوراخ میں   روئی ڈال کر)  اتنی دیر تک خون روک سکتی ہے کہ وُضو کرکے فرض پڑھ لے توعذر ثابت نہ ہوگا۔ (یعنی یہ معذور نہیں   کیونکہ یہ عُذر دُور کرنے پر قدرت رکھتی ہے)   (اَیضاًص۱۰۷)     

 {9} اگر کسی ترکیب سے عُذر جاتا رہے یا اس میں   کمی ہو جائے تو اس ترکیب کا کرنا فَرض ہے، مَثَلاً کھڑے ہو کر پڑھنے سے خون بہتا ہے اور بیٹھ کر پڑھے تو نہ بہے گا تو بیٹھ کر پڑھنا فَرض ہے۔  ( بہارِ شریعتحصّہ ۲،ص۱۰۹،دُرِّمُختار، رَدُّالْمُحتار، ج۱،ص۵۵۸) ( معذور کے وضو کے تفصیلی مسائل فتاوٰی رضویہ مُخَرَّجہ  جلد4صَفْحَہ367  تا375 ،بہارِ شریعت حصہ2صَفْحَہ107تا109سے معلوم کرلیجئے )

        اسلامی بہنو! جہاں   جہاں   ممکن ہو وہاں  اللّٰہعَزَّوَجَلَّ کی رضا کیلئے اچّھی اچّھی نیّتیں   کر لینی چاہئیں  ، جتنی اچّھی نیّتیں   زیادہ اُتنا ثواب بھی زیادہ اور اچّھی نیت کے ثواب کی تو کیا بات ہے ! میٹھے میٹھے آقا مکّی مدنی مصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمانِ جنّت نشان ہے:  اَلنِّیَّۃُ الْحَسَنَۃُ تُدْخِلُ صَاحِبَہَا الْجَنَّۃَ ۔  اچّھی نیّت انسان کو جنّت میں   داخِل کرے گی۔ ‘‘   ( اَ لْجَامِعُ الصَّغِیر لِلسُّیُوْطِیّ ، ص۵۵۷ حدیث ۹۳۲۶ )    

    وُضُو کی نیّت نہیں   ہوگی تب بھی فِقہِ حنفی کے مُطابِق وُضو ہو جائے گا مگر ثواب نہیں   ملیگا۔عُمُوماً وضو کی تیّاری کرنے والی کے ذِہن میں   ہوتا ہے کہ میں   وُضو کرنے والی ہوں   یِہی نیّت کافی ہے ۔ تاہم موقع کی مُناسَبَت سے مزید نِیَّتیں   بھی کی جاسکتی ہیں  :

 ’’ ہر وقت باوضو رہنا ثواب ہے ‘‘  کے بیس حُرُوف کی نسبت سے وُضو کے بارے میں   20نیّتیں 

           {1} بے وُضوئی دُور کروں   گی {2}  جوباوُضو ہووہ دوبارہ وُضو کرتے وقت یوں   نیّت کرے :  ثواب کیلئے وُضو پر وُضو کروں   گی {3}  بِسمِ اللّٰہ والْحمدُ لِلّٰہ کہوں   گی {4}   فرائض و  {5}  سُنَن او ر {6}  مُستَحَبّاتکا خیال رکھوں   گی  {7} پانی کا اِسراف نہیں   کروں  گی {8} مکروہات سے بچوں   گی  {9}  مِسواک کروں   گی  {10} ہرعُضو دھوتے وَقت دُرُود شریف اور {11}  یاقادِرُپڑھوں   گی  (وُضو میں   ہرعُضو دھونے کے دَوران یا قادِرُ پڑھنے والی کو اِن شاء اللّٰہ دشمن اِغوا نہیں   کر سکے گا)   {12}  فَراغت کے بعداَعضائے وُضو پر تَری باقی رہنے دوں   گی {13 14-)   وُضو کے بعد دو دُعائیں   پڑھوں   گی  ( الف) اَللّٰھُمَّ اجْعَلْنِیْ مِنَ التَّوَّابِیْنَ وَاجْعَلْنِیْ



Total Pages: 92

Go To