Book Name:Chanday Kay Baray Main Sawal Jawab

خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن کے فرمان کا خلاصہ ہے :  جن کو سُوال کرنا حلال نہیں  ایسوں کے  سُوال پر ان کا حال جان کر ان کے سوال پر کچھ دینا کوئی کارِ ثواب نہیں  بلکہ ناجائز و گناہ اورگناہ میں  مدد کرنا ہے ۔  (فتاوٰی رضویہ مُخرَّجہ ج ۱۰ ص ۳۰۳ مُلَخَّصاً)

          سرکارِ مدینہ ، سلطانِ باقرینہ ، قرارِ قلب وسینہ ، فیض گنجینہ، صاحبِ مُعطَّر پسینہ باعثِ نزولِ سکینہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کا فرمانِ باقرینہ ہے :  جوشخص لوگوں  سے سُوال کرے حالانکہ نہ اُسے فاقہ پہنچا نہ اتنے بال بچّے ہیں  جن کی طاقت نہیں  رکھتا تو قِیامت کے دن اس طرح آئے گا کہ اُس کے مُنہ پر گوشت نہ ہو گا ۔   

                                          (شُعَبُ الْاِیْمَان لِلْبَیْہَقِیّ  ج۳ ص ۲۷۴حدیث ۳۵۲۶)

           صدرُ الاَفاضِل حضرتِ علّامہ مولانا سیِّد محمد نعیم الدّین مُراد آبادی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْھَادِی نَقل کرتے ہیں : ’’ بعض یَمَنی حج کے لئے بے سامانی کے ساتھ روانہ ہوتے تھے اور اپنے آپ کو مُتَوَکِّل کہتے تھے اورمکّۂ مکرّمہ زَادَھَا اللہُ شَرَفاً وَّ تَعْظِیْماً پہنچ کر سُوال شروع کر تے اور کبھی غَصْب وخِیانت کے بھی مُرتکب ہوتے ۔ ان کے حق میں  یہ آیتِ مقدّسہ نازِل ہوئی اورحُکم ہوا تَوشہ لے کر چلو اَورَوں  پر بار نہ ڈالو، سُوال نہ کرو کہ بہترتَوشہ پرہیز گاری ہے ۔ ‘‘ آیتِ مُقدَّسہ یہ ہے :

وَ تَزَوَّدُوْا فَاِنَّ خَیْرَ الزَّادِ التَّقْوٰى٘-  ( پ۲، البقرۃ ۱۹۷)

ترجَمۂ کنزالایمان :  اور توشہ ساتھ لو کہ سب سے بہتر تَوشہ پرہیزگاری ہے ۔

  (خزائن العرفان ص۶۷)

اجتِماع کی خُصُوصی ٹرین کیلئے 5 مَدَنی پھول

سُوال :  بینَ الاَقوامی سالانہ سنّتوں  بھرے اجتِماع میں  شہر سے صحرائے مدینہ مدینۃ الاولیا ملتان شریف جانے کیلئے مختلف شہروں  سے چلائی جانے والی خُصوصی ٹرینوں کیمُتَعَلِّق شَرعی اَحکام کی روشنی میں  ذمّے دار اسلامی بھائیوں  کیلئے کچھ مَدَنی پھول دے دیجئے ۔

جواب : {1} جتنی نِشَستیں   مخصوص کرواکر ان کے پیسے ادا کئے ہیں  ان سے زائد ایک بھی اسلامی بھائی مفت مت بٹھایئے ورنہ گنہگار ہوں  گے {2} انتِظامیہ سے آنے جانے کا جو وَقت طے کیا ہوا ہے اُس میں  آپ کی طرف سے ہرگز کوتاہی نہیں  ہونی چاہئے ، تاخیر سے نِظام مُتأَثِّر ہوتا اور مذہبی لوگوں  کی بھی بدنامی ہوتی ہے ۔  اگر کسی کا انتِظار کئے بِغیر طے شُدہ وَقت پر ٹرین چل پڑی اور بعض عادی سُست افرادسُوار ہونے سے رَہ گئے تو اِنْ  شَآءَاللہ عَزَّ    وَجَلَّ آیِندہ کیلئے عوام و انتِظامیہ دونوں  میں  ذمّہ دار اسلامی بھائیوں  کا اِعتِماد بحال ہو جائے گا اور ساری ترکیب مدینہ مدینہ ہو جائے گی ۔ جی ہاں  عوام کا اعتِماد بحال کرنا بھی ضَروری ہے کہ اعلان کئے ہوئے وَقت پر ٹرین



Total Pages: 50

Go To