Book Name:Saya e Arsh Kis Kis ko Milay ga?

محشرکی سخت گرمی میں عرش الہٰی عَزَّوَجَلَّ کاسایہ پانے والے خوش نصیبوں کابیان

 

 

تَمْھِیْدُالْفَرْشِ فِی الْخِصَالِ الْمُوْجِبَۃِ

لِظِلِّ الْعَرْش

ترجمہ بنام

سایۂ عرش کس کس کوملے گا۔۔۔؟

 

 

مُصنِّف

امام جلا ل الدین عبدالرحمن بن ابی بکرسیوطی شافعی علیہ رحمۃ اللہ الکافی

المتوفیٰ  ۹۱۱ھـ

 

 

پیش کش

 

 

مجلس المدینۃ العلمیہ(شعبہ تراجم ِ کتب)

 

 

ناشر

 

 

مکتبۃالمدینہ باب المدینہ کراچی

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

’’ سایۂ عرش ہوعطایارب  !‘‘ کے ستَّرہ  حُرُوف کی

نسبت سے اِس کتاب کو پڑھنے کی 17  نیّتیں

 اَز : شیخ طریقت ، امیراَہلسنت ، بانی ٔدعوتِ اسلامی حضرت علامّہ

مولاناابوبلال محمدالیاس عطارقادری رَضوی دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ

فرمانِ مصطفی صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم :   نِیَّۃُ الْمُؤْمِنِ خَیْرٌ مِّنْ عَمَلِہٖo مسلمان کی نیّت اس کے عمل سے بہتر ہے۔

             (المعجم الکبیر للطبرانی ج۶ ص۱۸۵حدیث۵۹۴۲ )

 دو مَدَنی پھول :

 {۱} بِغیر اچّھی نیّت کے کسی بھی عملِ خیر کا ثواب نہیں ملتا۔

{۲}جتنی اچّھی نیّتیں زِیادہ ، اُتنا ثواب بھی زِیادہ۔

          {۱}ہر بارحمد و {۲}صلوٰۃ اور{۳}تعوُّذو{۴}تَسمِیہ سے آغاز کروں گا(اسی صَفْحَہ پر اُوپر دی ہوئی دو عَرَبی عبارات پڑھ لینے سے چاروں نیّتوں پر عمل ہوجائے گا) {۵}رِضائے الٰہی عَزَّوَجَلَّ کے لئے اس کتاب کا اوّل تا آخِر مطالَعہ کروں گا۔ {۶} حتَّی الْوَسْعْ اِس کا باوُضُو اور {۷}قِبلہ رُو مُطالَعَہ کروں



Total Pages: 67

Go To