$header_html

Book Name:Shan e Siddiq e Akbar

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

شانِ صدیقِ اکبر   رضی اللہ عنہ

دُعائے عطار : یا اللّٰہ پاک!جو کوئی 17صفحات کا رِسالہ’’شانِ صدیق ِ اکبر‘‘پڑھ یا سُن لے اُس کوبے حساب بخش کر جنّتُ  الْفردوس میں جنّتی ابنِ جنّتی ، صحابی ابنِ صحابی حضرتِ صدّیقِ اکبر  رضی اللہ عنہ  کا پڑوس عطافرما۔   اٰمِین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین  صَلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم  

دُرُود شریف کی فضیلت 

               فرمانِ حضرت سیِّدُنا صدّیقِ اکبر رضی اللہ عنہ : نبی  صَلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم  پر دُرُودِ پاک پڑھنا گُناہوں  کو اِس قَدَر جَلد مٹاتاہے کہ پانی بھی آگ کو اُتنی جلدی نہیں  بُجھاتا اور نبی   صَلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم  پر سَلام بھیجنا گردنیں(یعنی غلام)آزاد کرنے سے اَفضل ہے۔             (تاریخِ بغداد  ج۷  ص 172)

جو ہو مریضِ لادوا یا کسی غم  میں مُبتلا           صبح و مسا پڑھے سدا صَلِّ عَلٰی مُحَمّد

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                                                               صلَّی اللہُ علٰی محمَّد

ایمان اَفروز خواب

                             اِسلام کا سورج طُلوع ہونے سے پہلےزمانہ ٔ جاہلیت کے دَور میں ایک نیک سیرت تاجر(یعنی بزنس مین)مُلک ِ شام تجارت (یعنی بزنس)کے لیے گیا ، وہاں اُس نے ایک خواب دیکھا ، جو’’بحیرا ‘‘نامی راہب کوسنایا۔ اُس راہب نے پوچھا : تم کہاں سے آئے ہو؟ اُس تاجر نے جواب دیا : ’’مکے سے۔ ‘‘اُس نے پھرپوچھا : ’’کون سے قبیلے سے تعلق رکھتے ہو؟ ‘‘ تاجر نے بتایا : ’’قریش سے۔ ‘‘ پوچھا : ’’کیا کرتے ہو؟ ‘‘کہا : تاجر(یعنی بزنس مین)


 

 



Total Pages: 17

Go To
$footer_html