Book Name:Uyun ul Hikayaat Hissa 1

جانب روانہ ہوگیا ۔

            (میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!سبحان اللہ عزوجل!اس پہاڑی علاقے میں رہنے والے شخص کی کیسی نصیحت بھری گفتگو تھی، اس کے ان چند کلمات میں دنیا وآخرت کی بھلائی کے بہترین اُصول ہیں۔ اللہ عزوجل ہمیں ہر حال میں اپنا مطیع وفرمانبردار رکھے، اے اللہ عزوجل! ہمیں گناہوں پر نادم ہونے کی تو فیق عطا فرما ۔ جب بھی کوئی گناہ سر زد ہو فوراً ہمیں تو بہ کی توفیق عطا فرما،اے اللہ عز وجل !ہمارے حال زار پررحم وکرم فرما۔

 

{اللہ عزوجل کی اُن پر رحمت ہو۔۔اور۔۔ اُن کے صدقے ہماری مغفرت ہو۔آمین بجاہ النبی الامین صلی اللہ تعالی علیہ وسلم}

؎   ندامت سے گناہوں کا اِزالہ کچھ تو ہوجاتا                                                     ہمیں رونا بھی تو آتا نہیں ہائے ندامت سے

 

 

۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷

حکایت نمبر139:                                    

اچھے لوگ کون ہیں ؟

             حضرت سیدنا زید بن عباس علیہ رحمۃ اللہ الرزاق فرماتے ہیں کہ جب خلیفہ ہارون الرشید علیہ رحمۃ اللہ المجید نے حج کیا تو ان سے کہا گیا کہ اس سال زمانے کے مشہور ولی حضرت سیدنا شیبان علیہ رحمۃ اللہ المنان بھی حج کے لئے آئے ہوئے ہیں۔ جب خلیفہ ہارو ن الرشیدعلیہ رحمۃ اللہ المجید نے یہ سنا تو اپنے ساتھیوں کو حکم دیا کہ بڑے ادب واِحترام سے انہیں میرے پاس لے آؤ ،ہم ان کی صحبت سے فیضیاب ہونا چاہتے ہیں۔‘‘ چنانچہ حضرت سیدنا شیبان علیہ رحمۃ اللہ المنان کو بڑے ادب واِحترام کے ساتھ امیر المؤمنین ہارون الرشید علیہ رحمۃ اللہ المجید کے پاس لا یا گیا۔ خلیفہ نے انہیں اپنے پاس بٹھایا اورعرض کی : ’’مجھے کچھ نصیحت کیجئے تا کہ میں آخرت میں نجات پا جاؤں۔‘‘ تو حضرت سیدنا شیبان علیہ رحمۃ اللہ المنان نے فرمایا :’’ اے امیر المؤمنین! میں عربی زبان سے اچھی طرح واقف نہیں ، آپ کسی ایسے شخص کو بلوا لیں جو میری تر جمانی کر سکے ۔‘‘

            چنانچہ ایک ایسے شخص کو لایا گیا جو آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی تر جمانی کر سکے۔ آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے اس شخص سے کہا : ’’امیر المؤمنین سے کہہ دیجئے کہ جو شخص تجھے عذابِ آخرت سے ڈراتا ہے اور یہ کہتا ہے کہ اللہ عزوجل کی طر ف سے بے خوف نہ ہونا جب تک تُو امن والی جگہ(یعنی جنت )میں نہ پہنچ جائے ، ایسا شخص اس سے بہتر ہے جو تجھے لمبی لمبی اُمیدیں دلاتا ہے اور کہتا ہے کہ بس اب تو تُو بخش دیا گیا ہے حالانکہ ابھی تیری زندگی باقی ہے اور ابھی تُو امن والی جگہ میں پہنچا ہی نہیں۔‘‘

           

 



Total Pages: 412

Go To