Book Name:Uyun ul Hikayaat Hissa 1

پھر ایک آواز سنائی دی:’’کیا تم ہی لقمان ہو؟ ‘‘آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا : ’’جی ہاں ! میں ہی لقمان ہوں۔‘‘ پھر آواز آئی:’’ کیا تم حکیم ہو ؟‘‘آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہنے فرمایا:’’ مجھے ہی لقمان حکیم کہا جاتاہے۔‘‘ پھر آواز آئی:’’ تمہارے اس نا سمجھ بیٹے نے تم سے کیا کہا ہے ؟‘‘ حضرت سیدنا لقمان رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا:’’ اے اللہ عزوجل کے بندے! تو کون ہے ؟ہمیں صرف تیری آواز سنائی دے رہی ہے اور توخود نظر نہیں آرہا۔‘‘ پھر آواز آئی:’’میں جبرائیل (علیہ السلام) ہوں او رمجھے صرف انبیاء کرام علیہم السلام اور مقر ّب فر شتے ہی دیکھ سکتے ہیں ، اس وجہ سے میں تجھے نظر نہیں آرہا ،سنو!میرے رب عزوجل نے مجھے حکم دیا ہے کہ میں فلاں شہر اور اس کے آس پاس کے لوگو ں کو زمین میں دھنسا دو ں۔ مجھے خبر دی گئی کہ تم دونوں بھی اس شہر ہی کی طر ف آرہے ہو تومیں نے اپنے پاک پروردگار عزوجل سے دعا کی کہ وہ تمہیں اس شہر میں جانے سے روکے۔ لہٰذا اس نے تمہیں اس آزمائش میں ڈال دیاا ور تیرے بیٹے کے پاؤں میں ہڈی چبھ گئی، اس طرح تم اس چھوٹی مصیبت کی و جہ سے ایک بہت بڑی مصیبت (یعنی زمین میں دھنسنے ) سے بچ گئے ہو ۔‘‘

             پھر حضرت سیدنا جبرائیلعلیہ السلام نے اپنا ہاتھ اس زخمی لڑکے کے پاؤں پر پھیراتو اس کا زخم فوراً ٹھیک ہوگیا۔ پھر آپ علیہ السلام نے اپنا ہاتھ اس بر تن پر پھیرا جس میں پانی بالکل ختم ہوچکا تھا تو ہاتھ پھیر تے ہی وہ بر تن پانی سے بھر گیا اور جب کھانے والے بر تن پر ہاتھ پھیرا تو وہ بھی کھانے سے بھر گیا ۔ پھر حضرت سیدنا جبرائیلعلیہ السلام نے حضرت سیدنا لقمان رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ، آپ کے بیٹے اور آپ کی سواریوں کو سامان سمیت اٹھایا اور کچھ ہی دیر میں آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ  اپنے بیٹے اور سارے سامان سمیت اپنے گھر میں موجود تھے حالانکہ آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا گھر اس جنگل سے کافی دن کی مسافت پر تھا ۔

 {اللہ عزوجل کی اُن پر رحمت ہو۔۔اور۔۔ اُن کے صدقے ہماری مغفرت ہو۔آمین بجاہ النبی الامین صلی اللہ تعالی علیہ وسلم}

            (اے ہمارے پاک پروردگارعزوجل!ہم سے ہماری تمام مصیبتیں دورفرمادے ، ہم پر آنے والی بلاؤں کو شہیدِ کر بلا امام حسین رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے صدقے ردّ فرما دے۔ ہمیں اپنے فضل و کرم سے مصائب پر صبر کرنے کی توفیق عطا فرمااور بے صبری سے بچا)

 

 

؎ یاالہی عزوجل ہرجگہ تیری عطاکاساتھ ہو     جب پڑے مشکل ،شہ مشکل کشاکاساتھ ہو

اور۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اے اللہ عزوجل!

مشکلیں حل کر شہ مشکل کشا کے واسطے      کر  بلائیں  رد  شہید کربلا  کے  واسطے

۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷ ۷


 

 



Total Pages: 412

Go To