Book Name:Madani Kamon Ki Taqseem Kay Taqazay

اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ  اللہ  الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

’’تقسیم کاری ‘‘ کے9 حُروف کی نسبت سے اس رسالے کو پڑھنے کی ’’9  نیّتیں ‘‘

 فرمانِ مصطفی  صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ :    نِیَّۃُ الْمُؤْمِنِ خَیْرٌ مِّنْ عَمَلِہمسلمان کی نیّت اس کے عمل سے بہتر ہے۔(المعجم الکبیر للطبرانی، الحدیث :  ۵۹۴۲، ج۶، ص۱۸۵)

 دو مَدَنی پھول :

 (۱) بِغیر اچّھی نیّت کے کسی بھی عملِ خیر کا ثواب نہیں ملتا۔

(۲)جتنی  اچّھی نیّتیں زِیادہ، اُتنا ثواب بھی زِیادہ۔

 (۱)ہر بارحَمْد و (۲)صلوٰۃ اور(۳)تعوُّذو(۴)تَسمِیہ سے آغاز کروں گا۔ (اسی صفحہ کے اُوپر دی ہوئی دو عَرَبی عبارات پڑھ لینے سے چاروں نیّتوں پر عمل ہوجائے گا)۔ (۵) حتَّی الْوَسْع اِس کا باوُضُو اور (۶)قِبلہ رُو مُطالَعَہ کروں گا (۷)جہاں جہاں ’’اللّٰہ‘‘کا نام  پاک آئے گا وہاں  عَزَّ وَجَلَّ  اور(۸) جہاں جہاں ’’سرکار‘‘ کا اِسْمِ مبارَک آئے گا وہاں صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  پڑھوں گا(۹)دوسروں کویہ رسالہ پڑھنے کی ترغیب دلاؤں گا۔   

اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ  اللہ  الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

 مدنی کاموں کی تقسیم  کے تقاضے[1]؎

(اِس تحریری بیان کو اوّل تا آخر پڑھ لیں ۔ مَدَنی تربیت کے مدنی پھولوں کی خوشبوؤں سے مہک جائیں گے۔) اِنْ شَآءَ اللّٰہ  عَزَّ وَجَلَّ

دُرُودِ پاک کی فضیلت

        شیخ طریقت ، امیرِ اہلسنّت ، بانیٔ دعوتِ اسلامی حضرتِ علامہ مولانا ابو بلال محمد الیاس عطارؔ قادری رضوی ضیائی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ  اپنے رسالے ’’ضیائے درودوسلام‘‘ میں فرمانِ مصطفی صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نقْل فرماتے ہیں : ’’ مجھ پردُرود شریف پڑھ کر اپنی مجالس کو آراستہ کرو کہ تمہارا دُرودِپاک پڑھنا بروزِ قیامت تمہارے لیے نور ہو گاـ۔‘‘

(فردوسُ الاخبار، رقم الحدیث۳۱۴۸، ج۳، س۴۱۷، طبعۃ دارالکتب العربی بیروت)

 صَلُّوْ ا عَلَی الْحَبِیبْ    صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد   

           میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَزَّ وَجَلَّ میرے شیخِ طریقت ، امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ  کی خُون پسینے سے سینچی ہو ئی تبلیغِ قرآن وسنت کی عالمگیر غیرسِیاسِی تحریک ’’دعوتِ اسلامی ‘‘کامدنی پیغام تادمِ تحریر کم و بیش66مُمالک میں پہنچ چُکا ہے ۔مدنی کاموں کی تقسیم کی برکات سے متعدد ممالک میں کابینات و مشاورتیں قائم ہیں اور بے شمار اسلامی بھائی مختلف مَجالِس و مشاورتوں میں مُنقسم ہو کر امیرِ اہلسنّت   دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ  کی پیاری پیاری مدنی تحریک ’’دعوتِ اسلامی‘‘ کو آگے سے آگے بڑھانے میں مصروفِ عمل نظر آرہے ہیں ۔

        اَلْحَمْدُلِلّٰہِ   عَزَّ وَجَلَّ  مُتعدّد مُمالِک میں اسلامی بھائیوں اور اسلامی بہنوں کے بے شمار ہفتہ وار سُنّتوں بَھرَے اِجْتِماعات کے ساتھ ساتھ ہزار ہامَدارِسُ الْمَدِینَہ بَالِغَان و بَالِغَات نیز مُلک و بیرونِ ملک ہزار وں اِسلامی بھائی مدنی قافلوں کے ذریعے ’’دعوتِ اسلامی کا مدنی پیغام‘‘ پہنچا رہے ہیں ۔اب تک35سے زائدشُعْبَہ جات قائم ہو چکے ہیں ۔اللّٰہ  تَعَالٰی  کا شکر ہے ، جامِعَاتُ المدینہ کے ذریعے ہزاروں اِسلامی بھائی مدنی عالِم بن رہے ہیں ۔مدارسُ المدینہ میں 50,000 سے زائدمَدَنی مُنّے اورمَدَنی مُنّیاں عِلْم ِ دین اور قرآنِ پاک حِفظ و نَاظِرہ کی تعلیم مُفت حاصل کررہے ہیں ۔ جیل خانہ جات، مکتوبات و تعویذاتِ عطاریہ ، تَخَصُّصْ فِی الْفِقْہ، مکتبۃُ المدینہ ، I.T، مساجدومدنی مراکز(فیضانِ مدینہ)و جامعات و مدارِس کی تعمیرات ، خصوصی اسلامی بھائیوں (گونگے بہرے اور نابینا ) کے اِجتماعات ، رمضانُ المبارک میں 30اور10دِن کے اعتکاف، المدینۃُ الْعِلْمِیَہ ، دارُالاِفتاء اہلسنّت اور دِیگر شعبہ جات وغیرہ میں مدنی کام بڑھتا ہی چلا جارہا ہے ۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہِ  عَلٰی اِحْسَانِہٖ

دعوتِ اسلامی کی قیّوم ( عَزَّ وَجَلَّ )         سارے جہاں میں مچ جائے دُھوم

   اس پہ فِدا ہو بچہّ بچہّ                یااللّٰہ میری جھولی بھر دے( عَزَّ وَجَلَّ )

 (دُعائے عطار دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ )

تقسیم کاری کی ضرورت

        میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!مدنی کاموں کے بڑھنے کے ساتھ ساتھ اِن کی تقسیم کاری کی ضرورت میں بھی اِضافہ ہوتا چلا جا رہا ہے۔ چونکہ بڑی ذِمّہ داری والے اسلامی بھائیوں پر مدنی کاموں کی مصروفیت کا بوجھ بڑھ چُکانتیجۃ ً ہر  شعبے  کو بھر پوروقت دینا مُشکل ہو گیا ہے ۔اس لئے مدنی کاموں کے ساتھ ساتھ ذِمّہ دار کی شخصیت کوبھی تنظیمی لِحاظ سے نا قابلِ تَلافی نُقصان پہنچ سکتا ہے ۔   

تقسیم کاری کا بہترین وقت

        میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو !جب آپ اِس بات کو محسوس فرمائیں کہ ذِمّہ داری کے باعِث مصروفیت اِس قَدَر بڑھ چکی ہے کہ مدنی اُمُور کی اَنجام دہی کے لئے وقت کم پڑرہا ہے اورکثیر تعداد



1       یہ بیان نگرانِ شوریٰ حاجی محمد عمران عطاری سَلَّمَہُ الْبَاری نے۸شوال المکرم ۱۴۲۸ھ بمطابق 21اکتوبر 2007 ء فیضانِ مدینہ ، باب المدینہ کراچی کے مدنی مشورے میں فرمایا ۔جسے بذریعہ انٹرنیٹ مختلف شہروں میں بھی سنا گیا ۔ضروری ترمیم کے ساتھ پیش کیا جا رہا ہے۔



Total Pages: 15

Go To