Book Name:Jahannam Main Lay Janay Walay Amaal (Jild-1)

{13}…سرکارِ والا تَبار، بے کسوں کے مددگارصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  ’’ متکبرین کو قیامت کے دن چیونٹیاں بنا کر انسانی شکلوں میں اٹھا یاجائے گا کہ ہر چھوٹی سے چھوٹی چیزان پر غالب آجائے گی پھر انہیں جہنم کے ایک قید خانے کی طرف ہانکا جائے گا جسے’ ’بُوْلَس ‘‘  کہا جاتا ہے، وہاں آگوں کی آگ انہیں اپنی لپیٹ میں لے لے گی، انہیں  ’’ طِیْنَۃُ الْخَبَّالِ ‘‘  یعنی جہنمیوں کی پیپ پلائی جائے گی۔ ‘‘       (المسندللامام احمد بن حنبل، مسند عبداللہ  بن عمرو، الحدیث: ۶۶۸۹،ج۲،ص۵۹۶،بتغیرٍ قلیلٍ)

{14}…شفیعِ روزِ شُمار، دو عالَم کے مالک و مختارباِذنِ پروردگارعَزَّ وَجَلَّ  وصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  ’’ ظالم اور متکبر لوگ قیامت کے دن چیونٹیوں کی صورت میں اٹھائے جائیں گے، لوگ انہیں اللہ  عَزَّ وَجَلَّ کے معاملے کو ہلکا جاننے کی وجہ سے اپنے قدموں تلے روندتے ہوں گے۔ ‘‘                            (تخریج احادیث الاحیائ، باب ۳۴۴۱،ج۶،ص۴۲)

{15}…حسنِ اخلاق کے پیکر،نبیوں کے تاجور، مَحبوبِ رَبِّ اکبرصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے کہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّارشاد فرماتاہے :  ’’ کبریائی میری رِداء ہے، لہٰذا جومیری رداء کے معاملے میں مجھ سے جھگڑے گا میں اسے پاش پاش کردوں گا ۔ ‘ ‘

 (المستدرک ،کتاب الایمان، باب اھل الجنۃ المغلوبونالخ،الحدیث: ۲۱۰،ج۱،ص۲۳۵)

{16}…نبی کریم ،رء ُوف رحیم صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے کہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّارشاد فرماتاہے :  ’’ کبریائی میری رِداء اور عزت میرا ازار ہے، جو ان دونوں چیزوں میں سے کسی کے بارے میں مجھ سے نزاع کرے گا میں ا سے عذاب میں مبتلاکر دوں گا۔ ‘‘                     (کنزالعمال، کتاب الاخلاق، قسم الاقوال، باب الکبروالخیلائ، الحدیث: ۷۷۳۹،ج۳،ص۲۱۱)

{17}…نبی ٔمُکَرَّم،نُورِ مُجسَّمصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے کہ اللّٰہ   عَزَّ وَجَلَّ  ارشاد فرماتاہے  ’’ کبریائی میری رداء اور عظمت میرا ازار ہے، لہٰذا جوان میں سے کسی ایک کے بارے میں بھی مجھ سے نزاع کرے گا میں ا سے آگ میں پھینک دوں گا۔ ‘‘                           (سنن ابی داؤد، کتاب اللباس، باب ماجاء فی الکبر،الحدیث: ۴۰۹۰،ص۱۵۲۲)

{18}…رسولِ اکرم، شہنشاہ ِبنی آدم صلَّی اللہ  تعالیٰ علیہ وآلہ سلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے کہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّارشاد فرماتاہے  ’’ عزت میرا ازار اور کبریائی میری رداء ہے، لہٰذا جو ان دونوں کے معاملہ میں مجھ سے جھگڑے گا میں اسے عذاب میں مبتلاکروں گا۔ ‘‘

 (المعجم الاوسط،الحدیث: ۳۳۸۰،ج۲،ص۳۰۸)

{19}…حضور نبی ٔ پاک، صاحبِ لَولاک، سیّاحِ افلاک صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے کہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّارشاد فرماتاہے:   ’’  کبریائی میری رداء اور عظمت میرا ازار ہے، لہٰذا جو ان دونوں میں سے کسی ایک کے معاملہ میں مجھ سے لڑے گا میں اسے جہنم میں پھینک دوں گا۔ ‘‘           (سنن ابن ماجہ ، ابواب الزھد،باب البرأۃ من الکبروالتواضع، الحدیث: ۴۱۷۴،ص۲۷۳۱)

{20}…اللّٰہکے مَحبوب، دانائے غُیوب ،، مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیوب عَزَّ وَجَلَّ  وصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمنے ارشاد فرمایا:   ’’ جوآدمی اپنے آپ کو بڑا سمجھتاہے اور چلنے میں اِتراتا ہے، وہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ سے اس حال میں ملے گا کہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّاس پر غضب فرمائے گا۔ ‘‘

 (المستدرک ،کتاب الایمان، باب من یتعاظم فی نفسہالخ،الحدیث: ۲۰۸،ج۱،ص۲۳۵)

{21}…شہنشاہِ خوش خِصال، پیکرِ حُسن وجمالصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  ’’ تم سب حضرت آدم ( عَلَیْہِ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلَامُ )  کی اولاد ہواور حضرت آدم ( عَلَیْہِ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلَامُ  ) کومٹی سے پیداکیا گیاہے، چاہئے کہ اپنے آباؤ اَجداد پر فخر کرنے والی قومیں باز آجائیں ، یا پھر وہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ کے نزدیک کیڑے مکوڑوں سے بھی زیادہ حقیر ہو جائیں گی۔ ‘‘

 (البحرالزخار المعرف مسند البزار،المستظل بن حصین عن حذیفۃ،الحدیث: ۲۹۳۸،ج۷،ص۳۴۰)

{22}…دافِعِ رنج و مَلال، صاحب ِجُودو نوالصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  ’’ تکبر سے بچتے رہو کیونکہ اسی تکبر نے ہی شیطان کو اس بات پر اُبھارا تھا کہ وہ حضرت آدم ( عَلَیْہِ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلَامُ  )  کو سجدہ نہ کرے، حرص سے بچو کیونکہ حرص ہی نے حضرت آدم ( عَلَیْہِ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلَامُ  )  کو شجرِ ممنوعہ کھانے پر آمادہ کیا اور حسد سے بھی بچتے رہو کیونکہ حضرت آدم ( عَلَیْہِ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلَامُ  )  کے دو بیٹوں میں سے ایک نے دوسرے کو حسد ہی کی بنا پر قتل کیا تھا، لہٰذا حسد اس خطا کی جڑہے۔ ‘‘  (جامع الاحادیث للسیوطی،قسم الاقوال،الحدیث: ۹۳۱۴،ج۳،ص۳۹۰)

{23}…رسولِ بے مثال، بی بی آمنہ کے لال صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمورَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہَا کا فرمانِ عالیشان ہے :  ’’ تکبر سے بچتے رہو کیونکہ تکبر ہر انسان میں ہو سکتاہے اگرچہ اس نے جُبّہ ہی پہن رکھا ہو۔ ‘‘      (المعجم الاوسط،الحدیث: ۵۴۳،ج۱،ص۱۶۶)

{24}…خاتَمُ الْمُرْسَلین ، رَحْمَۃُ العٰلمینصَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  ’’ کیا میں تمہیں جہنمیوں کے بارے میں نہ بتاؤں ؟ ہر سرکش، جَوَّاظ، متکبراور بڑائی چاہنے والا جہنمی ہے۔ ‘‘

 (صحیح البخاری،کتاب التفسیر،باب نمبر۱،سورۃ نون، الحدیث: ۴۹۱۸،ص۴۲۲،بدون  ’’ جعظری ‘‘ )

                 ’’ جَوَّاظ ‘‘  سے مراد مال جمع کرکے روک لینے والا یا اِترا کر چلنے والا یا پھر زیادہ کھانے والاہے۔

{25}…سیِّدُ المبلغین، رَحْمَۃُ لِّلْعٰلَمِیْن صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  ’



Total Pages: 320

Go To