Book Name:Jahannam Kay Khatrat

        (۱)شعبۂ کتُبِ اعلیٰحضرت  رَحْمَۃُ   اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ                                     (۲)شعبۂ درسی کُتُب  

        (۳)شعبۂ اصلاحی کُتُب                     (۴)شعبۂ تفتیشِ کُتُب

        (۵)شعبہ تخریج                        (۶)شعبۂ تراجمِ کتب

                    ’’ا لمد ینۃ العلمیۃ ‘‘ کی اوّلین ترجیح سرکارِ اعلٰیحضرت اِمامِ  اَہلسنّت، عظیم البَرَکت، عظیمُ المرتبت، پروانۂ شمعِ رِسالت، مُجَدِّدِ دین و مِلَّت، حامیٔ سنّت ، ماحیٔ بِدعت، عالِمِ شَرِیْعَت، پیرِ طریقت، باعثِ خَیْر و بَرَکت، حضرتِ علاّمہ مولیٰنا الحاج الحافِظ القاری الشّاہ امام اَحمد رَضا خان  عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن  کی گِراں مایہ تصانیف کو عصرِ حاضر کے تقاضوں کے مطابق حتَّی الْوُسعٰ سَہْل اُسلُوب میں پیش کرنا ہے ۔ تمام اسلامی بھائی اور اسلامی بہنیں اِس عِلمی ، تحقیقی اور اشاعتی مدنی کام میں ہر ممکن تعاون فرمائیں اورمجلس کی طرف سے شائع ہونے والی کُتُب کا خود بھی مطالَعہ فرمائیں اور دوسروں کو بھی اِس کی ترغیب دلائیں ۔

           اللہ   عَزَّ وَجَلَّ   ’’دعوتِ اسلامی‘‘ کی تمام مجالس بَشُمُول’’المد ینۃ العلمیۃ‘‘ کو دن گیارہویں اور رات بارہویں ترقّی عطا فرمائے اور ہمارے ہر عملِ خیر کو زیورِ اخلاص سے آراستہ فرماکر دونو ں جہاں کی بھلائی کا سبب بنائے۔ہمیں زیرِ گنبدِ خضرا  شہادت، جنّت البقیع میں مدفن اور جنّت الفردوس میں جگہ نصیب فرمائے ۔

                    اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن  صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ 

                       

                                                                رمضان المبارک۱۴۲۵ھ    

پیش لفظ

           اللہ   عَزَّ وَجَلَّ   نے انسان کواپنی تمام مخلوق پر شرف اوربرتری عطافرمائی اور اشرف المخلوقات بنایا۔اسے تحقیق وتفکر کاایسا شعور عطا فرمایا کہ یہ براہین ودلائل کی روشنی میں حق وباطل میں تمیز کر سکتا ہے۔اس نے لوگوں کی ہدایت و رہبری کے لیے  پیغمبرمبعوث فرمائے، جنہوں نے اپنے فرائض منصبی کو کاملاً ادا کیا۔لوگوں کودعوتِ توحید دیتے ہوئے صرف ایک معبود ‘ربّ   عَزَّ وَجَلَّ   کی عبادت کی طرف بلایا، ایمان و کفر کا فرق واضح کیا، ایمان لانے والوں کے لیے انعاماتِ خداوندی اور ابدی نعمتوں کا مثردہ سنایا اورکفر وشرک پر اڑے رہنے والوں کو    اللہ   عَزَّ وَجَلَّ   کے عذاب سے ڈرایا۔ توخوش نصیب ہیں وہ جنہوں نے ان کی دعوت پر لبیک کہا، ایمان لائے اور توحیدورسالت کا اقرار کر کے اپنے رب   عَزَّ وَجَلَّ   کی رضا کے حصول میں کوشاں ہوگئے۔اور بد نصیبی ہے ان لوگوں کی جنہوں نے یہ سب کچھ جاننے کے باوجود   اللہ   عَزَّ وَجَلَّ   کی آیتوں کو جھٹلایا، کفروشرک کو اختیار کیا،   اللہ   عَزَّ وَجَلَّ    اور اس کے رسولوں   علیہم السلام   کی نافرمانی کو اپنا شعار بنالیا اورعذاب جہنم کے حق دار ہوئے ۔ قرآن مجید فرقان حمید میں ارشاد ہوتا ہے :

وَ الَّذِیْنَ كَفَرُوْا وَ كَذَّبُوْا بِاٰیٰتِنَاۤ اُولٰٓىٕكَ اَصْحٰبُ الْجَحِیْمِ۠(۱۹)                      (پ۲۷، الحدید : ۱۹)

ترجمہ کنزالایمان :  اور جنہوں نے کفر کیا اور ہماری آیتیں جھٹلائیں وہ دوزخی ہیں ۔

         جہنم غضبِ خداوندی اور اس کے عذاب و عقاب کا مظہرہے۔اس کے عذابات نہایت ہی سخت ہیں جنہیں برداشت کرنا کسی کے بس کی بات نہیں ۔ اس جہنم سے ایمان والوں کو بھی ڈرنا چاہئے اور   اللہ   عَزَّ وَجَلَّ   کی پناہ مانگنا چاہیے کیونکہ بعض فاسق وفاجر مسلمان ایسے بھی ہوں گے جن کو ان کے گناہوں کے سبب اس میں داخل کیا جائے گا۔ قرآن مجید فرقان حمید میں ایمان والوں کوجہنم سے بچنے اور بچانے کا حکم دیا گیا، چنانچہ ارشاد خداوندی ہے :

یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا قُوْۤا اَنْفُسَكُمْ وَ اَهْلِیْكُمْ نَارًا وَّ قُوْدُهَا النَّاسُ وَ الْحِجَارَةُ عَلَیْهَا مَلٰٓىٕكَةٌ غِلَاظٌ شِدَادٌ لَّا یَعْصُوْنَ اللّٰهَ مَاۤ اَمَرَهُمْ وَ یَفْعَلُوْنَ مَا یُؤْمَرُوْنَ(۶)

(پ۲۸، التحریم : ۶)

ترجمہ کنز الایمان : اے ایمان والو اپنی جانوں اور اپنے گھر والوں کو اس آگ سے بچاؤ جس کے ایندھن آدمی اور پتھر ہیں اس پر سخت کرّے فرشتے مقرر ہیں جو   اللہ  کا حکم نہیں ٹالتے اور جو انہیں حکم ہو وہی کرتے ہیں

        جہنم کیا ہے، کہاں ہے ، اس کے طبقات، اس کے شدائد کیا ہیں ، وہ کون سے اعمال ہیں جو جہنم میں لے جانے والے ہیں وغیرہ، ان کے بارے میں تفصیل جاننے کے لیے زیر نظر کتاب ’’جہنم کے خطرات ‘‘ کاتوجہ کے ساتھ مطالعہ کیجیے نیزدوسرے مسلمانوں کو بھی اس کے پڑھنے کی ترغیب دلائیے۔

        شیخ الحدیث حضرت علامہ عبد المصطفی اعظمی رَحْمَۃُ   اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ  نے اس کتاب میں ہمارے معاشرہ میں پائی جانے والی عام برائیوں مثلا جھوٹ ، غیبت، حسد، چغلی، کم ناپ تول، حرص، تکبر، ظلم، گالی گلوچ اور بے پردگی وغیرہ کے سبب ہونے والے عذابات کا تذکرہ آیات و احادیث کی روشنی میں کیا ہے اور ہر عنوان کے آخر میں مسائل وفوائد کے تحت خلاصہ بیان کیا ہے ۔فکر مدینہ(یعنی اپنا محاسبہ )کرنے والوں کے لیے اس کتاب میں  عبرت کے متعدد مدنی پھول ہیں ۔

        اراکینِ مجلس’’ المدینۃ العلمیۃ ‘‘ (دعوتِ اسلامی)نے اس کتاب کو مزید تزئین کے ساتھ شائع کرنے کا ارادہ کیا ، لہٰذادرج ذیل خوبیوں کے ساتھ یہ بہترین کتاب آپ کے ہاتھوں میں ہے۔

(1)جدید انداز پر کمپوزنگ جس میں علامات ترقیم کابھی خیا ل رکھا گیا ہے۔

(2)  محتاط پروف ریڈنگ(3) دیگر نسخوں سے مقابل

(4)حوالہ جات کی حتی المقدور تخریج (5) عربی وفارسی عبارات کی درستگی(6) پیرابندی (7)آیات کا ترجمہ اعلی حضرت، امام اہلسنت مولانا شاہ احمد رضا خان علیہ رحمۃ الرحمن کے شہرہ آفاق ترجمہ



Total Pages: 57

Go To