Book Name:Faizan e Chahal Ahadees

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہ  الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

 المد ینۃ العلمیۃ

از : شیخِ طریقت، امیرِ اہلسنّت، بانیٔ دعوتِ اسلامی حضرت علّامہ

 مولانا ابوبلال محمد الیاس عطاؔر قادری رضوی ضیائی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ  

   اَلْحَمْدُ للہ علٰی اِحْسَا نِہٖ وَ بِفَضْلِ رَسُوْلِہٖ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  تبلیغِ قرآن و سنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک ’’دعوتِ اسلامی‘نیکی کی دعوت، اِحیائے سنّت اور اشاعتِ علمِ شریعت کو دنیا بھر میں عام کرنے کا عزمِ مُصمّم رکھتی ہے، اِن تمام اُمور کو بحسن و خوبی سر انجام دینے کے لئے متعدَّد مجالس کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جن میں سے ایک مجلس ’’المد ینۃ العلمیۃ‘‘بھی ہے جو  دعوتِ اسلامی کے عُلماء و مُفتیانِ کرام کَثَّرَ ھُمُ اللّٰہُ تعالٰی پر مشتمل ہے ، جس نے خالص علمی، تحقیقی او راشاعتی کام کا بیڑا اٹھایا ہے۔ اس کے مندرجہ ذیل چھ شعبے ہیں :

        (۱)شعبۂ کتُبِ اعلیٰحضرت رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  (۲)شعبۂ درسی کُتُب  

        (۳)شعبۂ اصلاحی کُتُب                   (۴)شعبۂ تفتیشِ کُتُب

        (۵)شعبہ تخریج                      (۶)شعبۂ تراجمِ کتب

        ’’ا لمد ینۃ العلمیۃ‘‘ کی اوّلین ترجیح سرکارِ اعلٰیحضرت اِمامِ اَہلسنّت، عظیم البَرَکت، عظیمُ المرتبت، پروانۂ شمعِ رِسالت، مُجَدِّدِ دین و مِلَّت، حامیٔ سنّت ، ماحیٔ بِدعت، عالِمِ شَرِیْعَت، پیرِ طریقت، باعثِ خَیْر و بَرَکت، حضرتِ علاّمہ مولیٰنا الحاج الحافِظ القاری الشّاہ امام اَحمد رَضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن کی گِراں مایہ تصانیف کو عصرِ حاضر کے تقاضوں کے مطابق حتَّی الْوَسعَ سَہْل اُسلُوب میں پیش کرنا ہے ۔ تمام اسلامی بھائی اور اسلامی بہنیں اِس عِلمی ، تحقیقی اور اشاعتی مدنی کام میں ہر ممکن تعاون فرمائیں اورمجلس کی طرف سے شائع ہونے والی کُتُب کا خود بھی مطالَعہ فرمائیں اور دوسروں کو بھی اِس کی ترغیب دلائیں ۔

        اللہ عَزَّ وَجَلَّ ’’دعوتِ اسلامی‘‘ کی تمام مجالس بَشُمُول’’المد ینۃ العلمیۃ‘‘ کو دن گیارہویں اور رات بارہویں ترقّی عطا فرمائے اور ہمارے ہر عملِ خیر کو زیورِ اخلاص سے آراستہ فرماکر دونو ں جہاں کی بھلائی کا سبب بنائے۔ہمیں زیرِ گنبدِ خضرا  شہادت، جنّت البقیع میں مدفن اور جنّت الفردوس میں جگہ نصیب فرمائے ۔

                      اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم

                                                                                                

                                                                                                                        رمضان المبارک ۱۴۲۵ھ    

پہلے اسے پڑھ لیجئے

 

میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!

ٍ        اللہ   تَعَالٰی ارشاد فرماتا ہے :

لَقَدْ كَانَ لَكُمْ فِیْ رَسُوْلِ اللّٰهِ اُسْوَةٌ حَسَنَةٌ  ۲۱، الاحزاب : ۲۱)

ترجمہ کنزالایمان : بے شک تمہیں رسول اللہ  کی پیروی بہتر ہے ۔

        اللہ عَزَّ وَجَلَّ کے مَحبوب، دانائے غُیوب، مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیوب صَلَّی اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے خود ارشاد فرمایا :  خَیْرُالْھَدْی ھَدْیُ مُحَمَّدٍِیعنی بہترین راستہ محمد(صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ )کا راستہ ہے۔اَوْکَمَا قَالَ(الاحسان بترتیب صحیح ابن حبان، باب الاعتصام بالسنہ...الخ، الحدیث ۱۰، ج۱، ص۱۰۶ ملخّصاً)

  یقیناً نبی کریم رء و ف رحیم صَلَّی اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کے فرامین عظیمہ میں ہمارے لئے نصیحتوں کے انمول خزانے پنہاں ہیں ۔ زیرِ نظر کتاب ’’فیضانِ چہل احادیث‘‘ میں آپ صَلَّی اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کے 40ارشادات عالیہ پیش کئے گئے ہیں جن کا انتخاب مختلف کتب ِ احادیث سے کیا گیا ہے۔اس کتاب کا اسلوب کچھ یوں ہے کہ سب سے پہلے اصل عربی عبارت مُنْدَرَج ہے پھر طلبہ وطالبات کے لئے اس کا تحت اللفظ ترجمہ پیش کرنے کے بعددیگر اسلامی بھائیوں اور بہنوںکی آسانی کے لئے بامحاورہ ترجمہ بھی تحریر کردیا گیا ہے ۔ ہر حدیث کا ماخذ جلدوصفحہ نمبر، باب اور رقم الحدیث کے ساتھ بیان کیا گیا ہے ۔   

 اس کے بعد ہرحدیث کی مختصر وضاحت درج ہے ۔ضرورتاً شرعی مسائل بھی لکھ دئیے گئے ہیں۔وضاحت کے بعد فکرِ مدینہ کے عنوان سے  شیخ طریقت، امیر اہلسنّت حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطار قادری رضوی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ   کے عطا کردہ مدنی انعامات کی روشنی میں خود احتسابی کی مَدَنی سوچ دینے کی کوشش کی گئی ہے۔ ان سب سے آخر میں دعابھی لکھ دی ہے ۔

        اہلِ علم پر مخفی نہیں احادیث کا ترجمہ اور پھر اس کی وضاحت بے حدمشکل کام ہے کیونکہ حدیث تفصیلات ِعقائد اور احکامِ شرعیہ کے استنباط کا شرعی ماخذ بھی ہے۔ اگر ترجمہ ووضاحت



Total Pages: 35

Go To