Book Name:Pur Asrar Bhikari

 

حرام مال کی خیرات نا مقبول ہے

           حرام مال سے کئے جانے والے نیک کام بھی قَبول نہیں کیے جاتے ، کیونکہ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ  پاک ہے اور پاک مال ہی کوقَبول فرماتاہے  ۔ چُنانچِہ سرکارِ مدینہ ، قرارِ قلْب و سینہ، فیض گنجینہ، باعثِ نُزُول سکینہ، صاحبِ مُعَطّر پسینہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کافرمانِ عبرت نشان ہے  :  جوشَخص حرام مال کماتا ہے اور پھر صدَقہ کرتا ہے اُس سے قَبول نہیں کیا جائے گا اور اُس سے خَرچ کرے گا تو اِس کے لیے اُس میں بَرَکت نہ ہوگی اور اسے اپنے پیچھے چھوڑ ے گا تو یہ اس کے لیے دوزخ کا زادِ راہ ہوگا ۔   (شرح السنۃ للبغوی ج۴ ص۲۰۵، ۲۰۶ حدیث ۲۰۲۳ دارالکتب العلمیۃ بیروت)

 لُقمۂ حرام کی تباہ کاریاں

          منقول ہے  :  بنی آدم کے پیٹ میں جب حَرام کا لقمہ پڑا ، تو زمین و آسمان کا ہر فرشتہ اُس پر لعنت کریگا ، جب تک کہ وہ لقمہ اس کے پیٹ میں رہے گا اور اگر اسی حالت میں مریگا تو اس کا ٹھکانہ جہنَّم ہو گا ۔ ( مکاشَفَۃُ القُلُوب ، ص ۱۰ دارالکتب العلیمیۃ بیروت)

(۳)ٹیڑھی قَبْر

          ۲۷ جُمادِی الاوّل ۱۴۱۱  ؁ھ کو ایک پولیس افسر کا جنازہ راولپنڈی رتہ امرال قبرِستان میں لایاگیا ، جب اسے قَبْر میں اُتاراجانے لگا تو یکایک قَبْرٹیڑھی ہوگئی! پہلے پہل تو لوگوں نے اسے گورکَن کا قُصور قرار دیا ۔  دوسری جگہ  قَبْر کھودی گئی، جب میِّت کو اُتارنے لگے تو قَبْر ایک بار پھر ٹیڑھی ہوگئی!! اب لوگوں میں خوف وہِراس پھیلنے لگا ۔  تیسری بار بھی ایسا ہی ہوا ۔   قَبْر حیرت انگیز حد تک اِس قَدَر ٹیڑھی ہوجاتی کہ تدفین ممکِن نہ رہتی ۔ بِالآخِر شُرَکائے جنازہ نے مِل جُل کر مرحوم کیلئے دعائے مغفِرت کی اورپانچویں قَبْر میں ہر حال میں تدفین کا فیصلہ کیا گیا ۔  چُنانچِہ پانچویں بار قَبْر ٹیڑھی ہونے کے باوُجُود زبردستی پھنسا کر میّت کو اُتاردیا گیا ۔  ہم قَہرِ قَھّار اور غَضَبِ جبّار سے اُسی کی پناہ کے طلبگار ہیں  ۔

 

اَجَل نے نہ کسریٰ ہی چھوڑا نہ دارا

اِسی سے سکندر سا فاتِح بھی ہارا

ہراک لے کے کیا کیا نہ حسرت سِدھارا

پڑا رہ گیا سب یُونہی ٹھاٹھ سارا

جگہ جی لگانے کی دنیا نہیں ہے

یہ عبرت کی جا ہے تماشا نہیں ہے

        میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! پولیس افسر کے اِس لرزہ خیز واقِعہ میں عبرت ہی عبرت ہے  ۔ اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ   بہتر جانے اُس پولیس افسر کے کیا کیا گناہ تھے جس کی وجہ سے اُس کو لوگوں کیلئے سامانِ عبرت بنا دیا گیا! جس کوعُہدہ و منصب اور اِقتِدار کی خواہِش ہو وہ یہ روایت غور سے مُلا حَظہ کرے  :

 



Total Pages: 10

Go To