Book Name:Kia Qabar Par Phool Dalnay Say Murday Ki Naikiyan Barhti Hain

       مچھر وغیرہ کو بھگانے کے لیے خوشبودار چیزیں بھی آتی ہوں گی بعض بلب ایسے آتےہیں جن پر ایک ٹکیہ رکھی جاتی ہے جس سے مچھر بھاگ جاتے ہیں اور میں نے نوٹ کیا ہے اس میں خوشبو ہوتی ہے،مچھرجلیبیاں بھی جَلائی جاسکتی ہیں ان میں بھی خوشبو ہوتی ہے ۔  لیکن ”دیاسلائی یا ماچس کی تیلی وغیرہ مسجد میں جَلانا جائز نہیں کہ ان میں بدبو ہوتی ہے ۔ “([1])لہٰذا ان کو باہر سے جَلاکر مسجد میں  لائیں ۔  مَساجد کی کھڑکیاں  دَروازے بند کر دیں تاکہ کم سے کم مچھر اندر آ سکیں ۔  مچھر اور مکھیوں میں یہ  مسئلہ بھی ہے کہ مکھی روشنی میں آتی ہے اور مچھر اندھیرے میں کالے یا کتھئی  کپڑے پر آتا ہے سفید رنگ پر کم آتا ہے تو ہلکے رنگ کا لباس پہنیں،پاؤں میں موزے پہنیں تاکہ مچھر  کاٹ نہ سکے ۔  لوبان میں صَعْتَر نام کی ایک چیز جو پنساریوں کے پاس سے مل سکتی ہے وہ جَلائیں  اس میں خوشبو ہوتی ہے اور دُھواں بھی ہوتا ہے تو اُمید ہے اس کے دھوئیں سے بھی مچھر بھاگ جائیں گے ۔     

٭٭٭٭

 



[1]    بہارِ شریعت، ۱ / ۴۲۹، حصہ : ۲ ماخوذاً



Total Pages: 7

Go To